خیبر پی کے اسمبلی: جواب نہ ملنے پر اپوزیشن، حکومتی ارکان برہم، سیکرٹریوں کی جواب طلبی

19 اکتوبر 2016

پشاور (آئی این پی) خیبر پی کے اسمبلی اجلاس میں حزب اختلاف و حکومتی ارکان نے انتظامی سیکرٹریوں کی اجلاس میں عدم شرکت اور مختلف محکموں کی جانب سے سوالات کے جواب بروقت نہ دینے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے سپیکر اسد قیصر سے ان کے خلاف کاروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔ جس پر سپیکر اسد قیصر نے رولنگ دیتے ہوئے کہا چیف سیکرٹری دس دنوں کے اندر تمام انتظامی سیکرٹریز سے جواب طلبی کریں۔
اور اس حوالے سے رپورٹ صوبائی اسمبلی میں جمع کرائی جائے بصورت دیگر ان کے خلاف اقدامات اٹھائے جاسکتے ہیں۔ گزشتہ روز وقفہ سوالات کے دوران ایجنڈے میں شامل ہونے کے باوجود محکمہ توانائی، اعلیٰ تعلیم، دستاویزات وکتب خانہ اور محکمہ ابتدائی وثانوی تعلیم کی جانب سے سوالات کے جواب نہیں دئیے گئے، جے یوآئی کے مفتی سید جانان اور پیپلزپارٹی کے فخراعظم وزیر نے نکتہ اعتراض پر نشاندہی کرتے ہوئے محکموں کے خلاف سخت کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا۔ سینئرصوبائی وزیر عنایت اللہ نے کہا وزراء کو بھی اپنے محکموں کی نگرانی کرنی چاہیے۔ جے یوآئی کے مولانالطف الرحمن نے نکتہ اعتراض پر کہا پہلی بار حکومت سپیکر کے سامنے اپنی ہی بیوروکریسی کے خلاف رورہی ہے۔بیورو رپورٹ کے مطابق خیبر پی کے کا اجلاس پون گھنٹہ تاخیر سے منعقد ہوا جس میں صرف 24 ارکان اسمبلی شریک ہوئے الیکشن کمشن کی جانب سے 49 ارکان اسمبلی کی رکنیت گوشوارے جمع نہ کرانے کی وجہ سے معطل کی گئی تھی۔