سابق امریکی جنرل جیمز کارٹرائیٹ کا خفیہ معلومات افشا کرنے کا اعتراف

19 اکتوبر 2016

واشنگٹن(صباح نیوز)امریکہ کے سابق فوجی جنرل نے ان الزامات کا اعتراف کر لیا ہے کہ انھوں نے خفیہ معلومات افشا کرنے سے متعلق تفتیش کاروں سے جھوٹ بولا تھا۔جنرل جیمز کارٹرائٹ سابق جنرل اور وائس چیئرمین آف جوائنٹ چیفس آف سٹاف رہے ۔امریکی نشریاتی ادارے کے مطابق تفتیش کار ان سے یہ پوچھنا چاہتے تھے کہ ایران کے جوہری پروگرام کو متاثر کرنے کے لیے امریکہ اور اسرائیل کی طرف سے تیار کمپیوٹر وائرس سے متعلق معلومات انھوں نے صحافیوں کو افشا کی تھیں؟Stuxnet نامی وائرس کی وجہ سے 2010 میں ایران کے یورینیم افزودہ کرنے والے سینٹری فیوجز قابو سے باہر رفتار سے چلنے لگے تھے جس سے ممکنہ طور پر تہران کے جوہری ہتھیار بنانے کی کوششوں کو دھچکا لگا تھا۔کارٹرائٹ کو پانچ سال تک قید کی سزا ہو سکتی ہے لیکن اطلاعات کے مطابق ان کے وکیل اور استغاثہ نے چھ ماہ تک کی سزا پر اتفاق کیا ہے۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...