بہار: اونچی ذات کے نکمے دو بھائیوں کا ذہین دلت طالب علم پر وحشیانہ تشدد

19 اکتوبر 2016

پٹنہ (نیوز ڈیسک) بھارتی ریاست بہار کے ضلع مظفر پور میں اونچی ذات سے تعلق رکھنے والے طلبہ نے سرکاری سکول کے کلاس روم میں ساتھی طالب علم کو محض دلت ہونے کی بنا پر بری طرح مار مار کر شدید زخمی کر دیا۔ 16 سال کا یہ مظلوم طالب علم جو ایک غریب دلت سکول ٹیچر کا بیٹا اور واحد سہارا ہے، بہار کے گائوں سے مظفر پور ضلع میں اپنے دادا کے پاس رہ کر کیدر ودیالے سکول میں میٹرک کی تعلیم حاصل کر رہا تھا، طالب علم نے بتایا کہ گیارہویں اور بارہویں کلاس میں زیرتعلیم اعلیٰ ذات کے 2 سگے بھائیوں کو پڑھائی میں اچھے نمبر لینے اور اساتذہ سے تعریفیں ملنے کے بعد اس سے خواہ مخواہ کا بیر ہو گیا، وہ دونوں بھائی روزانہ اسے تشدد کا نشانہ بنانے ہفتے میں ایک مرتبہ چہرے پر تھوکتے۔ سکول انتظامیہ نے لڑکوں کے بااثر ہونے کی وجہ سے انکے خلاف دلت طالب علم کی شکایت کے باوجود کارروائی نہ کی جس پر دلت لڑکے کے ایک ساتھی نے تشدد کی ویڈیو بنائی اور سوشل میڈیا پر اپ لوڈ کر دی جس کے وائرل ہونے پر محکمہ تعلیم، پولیس اور انتظامیہ سب حرکت میں آ گئے۔ دلت طالب علم قتل کی دھمکیاں ملنے پر روپوش ہو چکا ہے۔ اونچی ذات کے دونوں ظالم بھائیوں کو سکول سے نکال دیا گیا۔ پولیس نے مقدمہ درج کر لیا۔ دونوں بھائی جووینائل جسٹس بورڈ کی طرف ریمانڈ پر ہیں۔