ہیلری ای میل کا معاملہ واٹرگیٹ سے بدتر سکینڈل: ٹرمپ، شوہر پر الزامات جھوٹے ہیں: اہلیہ

19 اکتوبر 2016

واشنگٹن (نمائندہ خصوصی + بی بی سی) امریکی ریپبلکن صدارتی امیدوار ٹرمپ نے اپنی حریف ڈیموکریٹ صدارتی امیدوار ہیلری پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہیلری کا ای میلز سکینڈل واٹر گیٹ سکینڈل سے بھی زیادہ بدتر ہے۔ پیر کی رات وسکنسن کے علاقے گرین بے میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے ٹرمپ نے کہا ہیلری کا محکمہ خارجہ اور ایف بی آئی کے ساتھ معاملہ مجرمانہ ہے۔ انڈر سیکرٹری پیٹرک کینڈی نے ایف بی آئی پر ہیلری کے غیر قانونی سرور سے ای میلز کو ان کلاسیفائی کرنے کیلئے ایف بی آئی پر غیر قانونی دبائو ڈالا۔ یہ ایک بڑا غیر قانونی اقدام ہے۔ 10 خواتین کی جانب سے ٹرمپ پر دست درازی کے الزامات سامنے آنے کے بعد ٹرمپ کی اہلیہ میلینیا بھی اپنے شوہر کے دفاع میں سامنے آگئی ہیں۔ میلینیا ٹرمپ نے کہا دست درازی اور قابل اعتراض گفتگو کے الزامات جھوٹے ہیں۔ انہیں اپنے شوہر پر پورا اعتماد ہے، وہ بہت معصوم ہیں، الزامات لگانے والوں کے پاس کوئی ثبوت نہیں۔ دریں اثناء تجزیہ کاروں نے حال ہی میں ٹرمپ کی جانب سے نیوجرسی میں ہندوئوں کی ریلی میں شرکت کے انتخابی نتائج پر فرق کے حوالے سے گفتگو کی ہے۔ بی بی سی کے مطابق اس ریلی کے شرکاء تفریحی تقریب کیلئے آئے تھے، ٹرمپ محض ایک سائیڈ شو تھا۔ ٹرمپ کی حمایت میں پلے کارڈ موجود تھے لیکن اس ریلی میں ٹرمپ کی دیگرریلیوں جیسا جوش و خروش نہیں تھا۔ ٹرمپ نے تقریب کے دوران اور بعد میں بھارتی میڈیا سے گفتگو میں پاکستان کا ذکر نہیں کیا اور اس حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں کہا وہ کوئی بات کرکے تنازع پیدا نہیں کرنا چاہتے۔ تجزیہ کار اس ریلی کو اہم قرار دے رہے ہیں تاہم بھارتی نژاد امریکی ڈیموکریٹک پارٹی کے حامی ہیں۔ ڈیموکریٹک پارٹی کا امیگریشن، سماجی مسائل اور انصاف کے حوالے سے مؤقف بھارتی نژاد امریکیوں کو مائل کرتا ہے۔ دوسری طرف بی بی سی کے مطابق یورپی ممالک، نیٹو اتحاد، روسی صدر کی حمایت، برطانیہ کے یورپی یونین سے نکلنے کی حمایت جیسے معاملات پر ٹرمپ پریشان ہیں۔ دریں اثناء ٹرمپ نے بھارت اور پاکستان کے درمیان ثالثی کی پیشکش کی ہے۔ڈونلڈ ٹرمپ کا کہنا تھا اگر وہ امریکہ کے صدر منتخب ہوگئے تو وہ پاکستان اور بھارت کے درمیان ثالث کا کردار ادا کرنا چاہیں گے کیونکہ تنازعات کی وجہ سے خطے میں کشیدگی ہے۔ ایک انٹرویو کی تفصیل کے مطابق ان کا کہنا تھا کہ میں پاکستان اور بھارت کے درمیان دوستانہ ماحول دیکھنا چاہتا ہوں کیونکہ یہ معاملہ بہت گرم ہے۔ ڈونلڈ ٹرمپ نے کشمیر کی موجودہ صورتحال کا بھی تذکرہ کیا، جب ان سے پوچھا گیا کہ وہ اس سلسلے میں کردار ادا کرنا چاہیں گے تو انہوں نے کہا کہ ’اگر ضروری ہوا تو میں ضرور اپنا کردار ادا کروں گا، اگر ہم پاکستان اور بھارت کے درمیان دوستی کا جذبہ پیدا کرسکیں تو یہ ہمارے لیے اعزاز کی بات ہوگی۔ میں بطور ثالث کردار ادا کرنے میں خوشی محسوس کروں گا۔امریکی صدر بارک اوباما نے صدارتی امیدوار ڈونلڈ ٹرمپ کو نصیحت کرتے کہا ہے کہ رونا دھونا بند کرو، ووٹ کیلئے کوشش کرو۔ اوباما نے ٹرمپ کی جانب سے روسی صدر پیوٹن کی چاپلوسی پر بھی تنقید کرتے کہا کہ امریکی سیاست میں ایسی چاپلوسی کی مثال نہیں ملتی۔ 

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...