پاکپتن، کسووال: 2خواتین ،ساہوکا میں نویں کے طالب علم سے اجتماعی زیادتی

19 اکتوبر 2016

پاکپتن+ کسووال+ ساہوکا+ پیر محل+ سرائے عالمگیر (نامہ نگاران) زیادتی کے واقعات میں شادی شدہ سمیت 2 خواتین اور نویں کے طالب علم کو ہوس کا نشانہ بنا دیا گیا جبکہ5 سالہ بچے سے اوباش نے زیادتی کر ڈالی، تفصیل کے مطابق ساہوکا کی نواحی آبادی طاہر نگر کے رہائشی نویں کلاس کے طالب علم سانول عباس کو فاروق احمد اور 2کس نامعلوم شخص بہلا پھسلا کر گھر سے خواجہ نور محمد مہارویں کے عرس پر لے گئے اور راستہ میں زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا اور بے ہوشی کی حالت میں گھر کے باہر چھوڑ کر فرار ہو گئے بد فعلی کی ویڈیو تیار کر کے بلیک میل کر تے رہے۔ پاک پتن سے نامہ نگار کے مطابق محلہ مشتاق نگر عارفوالا کی رہائشی فرزانہ بی بی اپنے گھر جا رہی تھی کہ گائوں 19/Eb کے قریب رمضان وغیرہ سات افرا دنے خاتون کو گھر چھوڑنے کے بہانے نامعلوم مقام پر لے جا کر زیادتی کا نشانہ بنادیا۔ پیرمحل کے گائوں763گ ب کے رہائشی جاوید اقبال کا 5سالہ بھتیجا عامر اقبال گھر جانے کی غرض سے ریلوے پھاٹک کے پاس موجود تھا محمد سعیدنے بچے کو مو ٹر سائیکل پر شورکوٹ روڈ پر لیجا کر جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔بچے کی چیخ و پکار پر اوباش اسے چھوڑ کر فرار ہو گیا۔ کسووال میں ضمیر کالونی کی مہوش بی بی نے پولیس کو درخواست دی کہ وہ گھر میں اکیلی تھی بشیراں بی بی،عبدالجبار اور صالم زبردستی گھر میں گھس آئے اور اس کو اغواء کرکے نامعلوم مقام پر لے گئے اور زبردستی زیادتی کا نشانہ بناڈالا ۔ سرائے عالمگیر کے نوا حی گا ئو ں کھمبی خانپور کا 14سالہ بلال مزمل جس کو گائو ں کے اوباش لڑکوں نے نشہ آور ادویات دے کر زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا بلال کے والد کی درخواست پر پولیس تھانہ صدر سرائے عالمگیر نے مقدمہ درج تو کر لیا مگر ملزمان بااثر ہونے کی وجہ سے پولیس ابھی تک انھیں گرفتار کرنے میں ناکام ہے بلال کے والدین نے میڈیا کو بتایا کہ ملزمان اس سے پہلے بھی گائوں کے بچوں کو زیادتی کا نشانہ بنا چکے ہیں ملزمان با اثر ہونے کی وجہ سے پولیس کی گرفت سے دور ہیں بلال کے والد کا کہنا ہے اگر مجھے انصاف نہ ملا تو میں اپنے بیوی بچوں سمیت خودکشی کر لو ں گا۔