لانگ مارچ ، بوٹ مارچ میں تبدیل ہو سکتا ہے، پیپلز پارٹی کا نواز شریف کو انتباہ

19 اکتوبر 2016

اسلام آباد (شفقت علی /نیشن رپورٹ) پیپلز پارٹی نے وزیر اعظم نواز شریف کو ’’بو ٹ مارچ‘‘ سے خبر دار رہنے کا کہا ہے۔ پیپلز پارٹی سمجھتی ہے کہ نواز شریف کو دسمبر سے قبل بلاول کے مطالبات ماننا پڑیں گے کیونکہ ’’بوٹ مارچ‘‘ کی تلوار بھی لٹک رہی ہے۔ پیپلز پارٹی کے رہنمائوں غلام مرتضیٰ ستی اور نور عالم خان نے ’’دی نیشن‘‘ کو بتایا کہ انکی پارٹی جمہوریت کو آگے بڑھتے دیکھنا چاہتی ہے مگر اس کیلئے وزیر اعظم نواز شریف کو سمجھداری کا مظاہرہ کر نا ہو گا۔ اگر نواز شریف نے اپنی انا اور ضد نہ چھوڑی اور پانامہ لیکس کی تحقیقات سے گریز کرتے رہے تو یہ ملک کے مستقبل کیلئے تباہ کن ہو سکتا ہے۔ واضح رہے بلاول بھٹو زرداری نے اپنے 4مطالبات نہ ماننے کی صورت میں 27دسمبر کو گڑھی خدا بخش میں حکومت کیخلاف لانگ مارچ کی کال دینے کا اعلان کر رکھا ہے۔ 2نومبر کو عمران نے بھی اسلام آباد بند کرنے کا اعلان کر رکھاہے۔ پیپلز پارٹی حکومت کیخلاف تحریک انصاف کی کشتی میں سوار نہیں تاہم حکومت بلاول کی وارننگ کو بھی ہلکا نہیں سمجھنا چاہیے۔ غلام مرتضیٰ نے کہا اگر حکومت پیپلز پارٹی کو لانگ مارچ کی اِجازت دے دیتی ہے کہ ’’ لانگ مارچ ‘‘ بڑی آسانی سے ’’ بوٹ مارچ ‘‘ میں تبدیل ہو سکتا ہے۔ نوازشریف کو لوگوں کو اعتماد میں لینے کیلئے تیزی سے عمل کرنا ہو گا۔ اگر آپ خود کو احتساب کیلئے پیش کرنے سے انکار کر رہے ہیں تو اس کا مطلب ہے آپ غریب اور امیر کیلئے الگ نظام قائم کرنا چاہتے ہیں ۔ وہ عوام کا اعتماد چاہتے ہیں تو اِنہیں حقیقی جمہوریت قائم کرنا ہو گی ۔ حکومت کیلئے بہتر یہ ہے کہ وہ تاخیر ہونے سے قبل ہی بلاول کے مطالبات مان لے۔ تاہم پی پی رہنما نے کہا انکی پارٹی عمران خان کی طرف سے اسلام آباد بند کرنے کے خیال کی تائید نہیں کرے گی۔ اس کے بجائے کرپٹ حکمرانوں کے دروازے بند ہونا چاہیں۔ نور عالم خان نے کہا حکومت نے بلاول کی پیشکش کو سنجیدگی سے نہ لیا تو تصادم ہو سکتا ہے۔ حکومت تاخیری حربے استعمال کرتی رہی تو اس کی سیاست ختم ہو سکتی ہے نواز شریف کو جمہوریت کو مضبوط کرنے کی سفر کی قیادت کرنا چاہیے۔ پی پی اور پی ٹی آئی کے کام کرنے کے انداز میں بڑا فرق ہے۔ عمران عام لوگوں کی زندگی متاثر کرنا چاہتے ہیں ہم حکومت پر احتساب کیلئے دبائو بڑھانا چاہتے ہیں حکومت کو فوری طور پر وزیر خارجہ مقرر کر نے ، پانامہ بل پاس کرنا چاہیے۔ مسلم لیگ ن کے رہنما طلال چوہدری نے کہا سرتاج عزیز وزیر خارجہ والا کام کر رہے ہیں ۔ اپوزیشن کو ڈکٹیٹ نہیں کرنا چاہیے۔