2 نومبر تحریک انصاف کے پروگرام سے پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن پریشان

19 اکتوبر 2016

کراچی(رپورٹ شہزاد چغتائی) تحریک انصاف کے 2 نومبر کے پروگرام سے پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ ن دونوں پریشان ہوگئے پیپلز پارٹی نے سارا وزن مسلم لیگ ن کے پلڑے میں ڈال دیا۔ پیپلز پارٹی کے رہنماﺅں کا خیال ہے کہ نومبر خیریت سے گذر جائے گا اور محمد نواز شریف 2018ءتک حکومت کریں گے لیکن تجزیہ نگاروں کا خیال ہے کہ دونوں حکمراں جماعتیں 2 نومبر کے لئے غلط اندازے لگارہی ہیں۔بعض تجزیہ نگاروں کا خیال ہے کہ عمران خان کو بھی کچھ نہیں ملے گا۔ اس دوران عمران خان کی گرفتاری کے امکانات بڑھ گئے ہیں۔ مسلم لیگ کراچی کے رہنماﺅں کا خیال ہے کہ عمران خان اس بار آسانی سے اسلام آباد میں داخل نہیں ہوسکیں گے۔ نومبر کا مہینہ ابھی دور ہے لیکن سیاسی تلخی بہت زیادہ بڑھ رہی ہے مسلم لیگ ن کے انتخابات کے موقع پر وزیراعظم بہت برہم دکھائی دیئے اور انہوں نے کپتان کے بخیئے ادھڑ ڈالے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ مسلم لیگ کے رہنماﺅں سے زیادہ پیپلز پارٹی کو یقین ہے کہ حکومت مدت پوری کرے گی۔ حقیقت یہ ہے کہ اس بار حکومت کے حامی تجزیہ کاروں کے ہاتھوں کے طوطے اڑے ہوئے ہیں اورا ن کا اعتماد متزلزل ہوگیا ہے۔
پیپلز پارٹی پریشان