ڈی ایچ اے سٹی کراچی خطے کا بہترین اور شاندار رہائشی منصوبہ

19 اکتوبر 2016

ڈی ایچ اے سٹی (ڈی سی کے) کراچی سپر ہائی وے پر واقع ڈی ایچ اے کا ایک عظیم الشان رہائشی منصوبہ ہے جو 20,000ایکڑ اراضی پر پھیلا ہوا ہے ۔ ڈی ایچ اے سٹی میں 50,000سے زائد رہائشی پلاٹ ہیں اور ایک ملین سے زائد افراد کی رہائش کی گنجائش رکھی گئی ہے۔ ڈی ایچ اے سٹی کراچی ایک ایسے دل پذیر طرز رہائش کا نام ہے جہاں جدید آسائشات اور زندگی کے بھرپور تمام تر قدرتی مناظراپنی تمام تر دلفریبی کے ساتھ موجود ہیں۔ اسے ایک بین الاقوامی معیار کے ماسٹر پلان کے مطابق اعلیٰ ترین انجینئرنگ اور انفراسٹکچر اُصولوں کے مطابق تیزی سے تعمیر کیا جارہا ہے جسکی کمالیت و جدت عوام و خواص کو ورطہ حیرت میں ڈال دے گی۔ اس شہر کے گرد بائونڈری وال ، انٹرنس گیٹ، آفس، ریذیڈیشنل ، کمپوزٹ بلڈنگ کمپلیکس، روڈ نیٹ ورک ، جدید انفارمیشن اینڈ وزیٹر سینٹر اور دیگر پروجیکٹس تیزی سے تعمیر ہورہے ہیں۔ کراچی شہر سے56کلومیٹر کی مسافت اور کراچی ائیرپورٹ سے35منٹ کی ڈرائیو پر ڈی ایچ اے سٹی میں ماہرین دن رات اپنے کام میں مصروف عمل ہیں۔ ڈی ایچ اے سٹی ایک منفرد رہاہشی منصوبہ ہے جسکا تمام تر رقبہ ڈی ایچ اے کراچی نے قوائد و ضوابط کے مطابق حاصل کرکے اس کے استعمال کا قانونی اختیار اور زمینی قبضہ حاصل کرلیا ہے۔ ڈی ایچ اے سٹی کیلئے منتخب علاقہ قدرتی Landscapeکا دلکش مجموعہ ہے جس میں چھوٹی چھوٹی پہاڑیاں، قدرتی ندی نالے، وادیاں اور آبی گذر گاہیں موجود ہیں۔ ڈی ایچ اے کراچی کی انتظامیہ اپنے پچاس سال سے زائد بے مثال تعمیراتی تجربے کو بروئے کار لاتے ہوئے اور معروف بین الاقوامی ٹائون پلاننگ ایجنسیوں کی مدد سے ڈی ایچ اے سٹی کو ایک بین الاقوامی اہمیت کے حامل منفرد شہر کے طور پر تعمیر کررہی ہے۔ تعمیراتی عمل کے ساتھ پانچ رہائشی سیکٹرز کی تعمیر پر خصوصی کام کیا جارہا ہے ، جبکہ سیکٹر ڈیولپمنٹ میں سڑکوں ، پارکس، اسکول، مسجد ، بنیادی انفراسٹکچر اور دیگر رہائشی سہولیات کی فراہمی کوبھی یقینی بنایا جارہا ہے۔ شہر کی فزیکل پلاننگ اس کی جدت کی آئینہ دار ہے، دکانوں، مکانوں ، مساجد اور دیگر کمرشل کوارٹرز کے مابین سکون، امن اور خاموشی کو برقرار رکھا گیاہے تاکہ ٹریفک کے شور سے علاقہ مکین کم سے کم متاثر ہوں۔ موجودہ حالات کے پیش نظر حفاظتی اقدامات کا خاص خیال رکھا گیا ہے۔ سیکورٹی ٹاورز، چیک پوسٹوں اور مرکزی داخلی دروازہ کے ساتھ علاقے کے مکمل الیکڑونک سرویلنس کے ذریعے علاقہ مکینوں کے تحفظ کو یقینی بنایا گیا ہے۔
ڈی ایچ اے سٹی کے مرکز میں ثقافتی و اقتصادی عمل کے فروغ کے لئے ڈائون ٹائون ڈسٹرکٹ کا قیام بھی عمل میں لایاگیا ہے جہاں روزانہ چوبیس گھنٹے ، کمرشل ، کلچرل ، تعلیم ، صحت ، رہائش اور تفریحی مشاغل جاری رہیں گے۔ کاروبار معشیت مضبوط تر اور معیاری زندگی بلند تر رہے گی۔ ڈی سی کے کی تعمیر میں شعبہ فنون و فنون لطیفہ کو بھی مد نظر رکھا گیا ہے ماسٹر پلان میں بڑے بڑے پلاٹ آڈیٹوریم، انڈروآئوٹ ڈور تھیٹرز، گیمز، آرٹ گیلریز، میوزیم اور پبلک لائبریری کے لئے بھی مختص کئے گئے ہیں، میوزک اور آرٹ سے دلچسپی رکھنے والوں کے لئے اس شہر میں وہ سب کچھ ہوگا جو انکی روح کو جلا و تسکین بخشے گا، تعلیمی ڈسٹرکٹ میں اعلیٰ تعلیم کے فروغ کے لئے پانچ ملکی اور بین لاقوامی یونیورسٹیاں اور تعلیمی اداروں کا قیام منصوبے کا اہم حصہ ہے جہاں ملکی و غیر ملکی طالب علموں کو عالمی معیار کے عین مطابق انڈر اور پوسٹ گریجوٹ پروگرامز کی تعلیم فراہم کی جائے گی۔ زندگی کی اصل خوبصورتی و رعنائی صحت میں ہے، اس مقصد کیلئے شہروں کے لئے اسپورٹس سینٹرز اور شاندار گالف کلب بھی ڈیزائن کئے گئے ہیں۔
مستقبل قریب میں شروع ہونے والے ملیر موٹر وے پروجیکٹ سے ڈی ایچ اے سٹی کی اہمیت و افادیت دو چند ہو جائے گی جس کے نتیجے میں ملیر ندی کے ساتھ ساتھ سپر ہائی وے کے ذریعے کراچی پورٹ ٹرسٹ سے ڈی ایچ اے سٹی تک اسٹرٹیجک لنک کے ذریعے 59کلو میٹر کا بظاہر طویل فاصلہ صرف 20منٹ میں بآسانی طے ہوجائے گا۔ تعلیم اور صحت کے شعبوں کے حوالے سے بھی ڈی ایچ اے سٹی کا مستقبل انتہائی روشن اور تابناک ہے۔ آئی بی اے اپنا نیا کیمپس ڈی ایچ اے سٹی میں قائم کر رہا ہے۔ جب کہ ڈائو یونیورسٹی آف میڈیکل سائنسزکی جانب سے اس کا نیا کیمپس ایک ٹیچنگ اسپتال اور لیورٹرانسپلانٹ سینٹر بھی یہیں پر قائم کیا جارہا ہے۔ اس کے علاوہ شوکت خانم کینسر اسپتال بھی اپنا نیا کینسر اسپتال ڈی ایچ اے سٹی میں ہی قائم کرنے جارہا ہے۔ اس سلسلہ کی مفاہمتی یاداشتوں پر دستخط ہوگئے ہیں اور ترقی کے روشن سفر کا آغاز ہوچکا ہے۔ یہ بات بھی قابل ستائش ہے کہ امریکہ کی مشہور زمانہ ہاورڈ یونیورسٹی کی جانب سے ڈی ایچ اے سٹی کو پاکستان کا سب سے پہلاSustainable City (پائیدار شہر) ہونے کا ایوارڈ بھی دیا جاچکا ہے۔ انٹیگریٹڈ کمیونیکشن ٹیکنالوجی (ICT)کے نظام کے تحت ایک ہی کیبل کے ذریعے آواز، ڈیٹا اور انڑنیٹ کی سہولیات کی یکجائی کی بدولت ڈی ایچ اے سٹی کو پاکستان کا پہلا سمارٹ سٹی کہلوانے کا اعزاز بھی حاصل ہوگا۔ ڈی ایچ اے سٹی زندگی کی بنیادی سہولیات مثلاً پانی، گیس اور بجلی کے علاوہ معاشرتی تقاضوں مثلاً اسکول ، کالج، مارکیٹ، مساجد اور کمیونٹی سینٹر کے اعتبار سے بھی مکمل طور پر خود کفیل ہوگا اور ان شعبوں میں تعمیراتی کام تیزی سے جاری ہیں۔

ڈی ایچ اے سٹی کی ایک نمایاں خصوصیت یہ بھی ہے کہ یہاں توانائی کے بحران کا تصور بھی نہیں ہوگا کیونکہ شمسی توانائی اور ونڈ انرجی کے علاوہ یہاں بجلی حاصل کرنے کے روایتی و سائل کے علاوہ قابل تجدید سبز توانائی کے وسائل بھی فروانی کے ساتھ دستیاب ہوں گے۔ شمسی پارکوں کی تعمیر ڈی ایچ اے سٹی کے منصوبوں کی ترجیحات میں خصوصیت سے شامل ہے۔ ڈی ایچ اے سٹی کو ایک نئے جذبے اور ولولہ کے ساتھ تیزی سے مکمل کیا جارہا ہے تاکہ حسب وعدہ سال 2016میں اسے تعمیراتی کام کے لئے کھول دیا جائے اور یہاں آبادکاری کا عمل شروع ہو جائے۔ ڈی ایچ اے سٹی کراچی پاکستان کا پہلا مستحکم اور جدید رہائشی منصوبہ ہے۔ جو ایک روشن باب کے طور پر جلد ہی کراچی کے اُفق پر اُبھرے گا۔ ڈی ایچ اے سٹی میں حال ہی میںDHA Oasisکے فارم ہاوسزز کا ایک جدید معاصراتی تقاضوں سے ہم آہنگ پرآسائش منصوبہ شروع ہوا ہے۔ جو اپنی جد ت اور آرام دہ سہولیات کی فراہمی کے لحاظ سے اپنی مثال آپ ایک لازوال رہائشی منصوبہ ہے۔ فارم ہاوسزز کی تعمیر تیزی سے جاری ہے اسکے علاوہ متعدد نئے پروجیکٹ جلد شروع ہونے والے ہیں جو ڈی ایچ اے کی فعالیت اور بے مثال انفرادیت کی مثال ہے۔ ڈی ایچ اے سٹی اب ایک نشان منزل کے طور پر ریفرنس پوائنٹ بن گیا ہے۔ اردگرد کی رہاہشی سکیمیں اب ڈی ایچ اے سٹی کے حوالے سے متعارف کروائی جارہی ہیں۔ گردو نواح کی زمینوں کے نرخ کئی گنا بڑھ گئے ہیں۔جبکہ ڈی ایچ اے سٹی میں پراپرٹی کی قیمتوں میں بے پناہ اضافہ ہوا ہے۔ جو ڈی ایچ اے سٹی منصوبے کی افادیت ، اہمیت اور شفافیت کی عکاس ہے۔ اپنی مثال آپ پاکستان کا پہلا منظم، سر سبزاور شاندار منصوبہ ڈی ایچ اے سٹی کراچی نہ صرف ملکی سطح پر قابل ستائش ہے بلکہ جلد ہی یہ بین الاقوامی سطح پر داد و تحسین حاصل کر کے دنیا بھر کو متحیر کرنے والا منصوبہ بن جائے گا۔