لاہور ہائیکورٹ:150 انسپکٹرز کو ڈی ایس پی بنانے کے معاملہ پر ہوم سیکرٹری اور آئی جی سے جواب طلب

19 اکتوبر 2016

لاہور ( اپنے نامہ نگار سے) لاہور ہائیکورٹ نے پنجاب پولیس کے 150 انسپکٹرز کو ڈی ایس پی کے عہدہ پر ترقی دینے کے معاملہ پر ہوم سیکرٹری پنجاب اور آئی جی پنجاب پولیس کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے 27 اکتوبر تک جواب طلب کر لیا۔ لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس قاسم خان نے ڈی ایس پی ملک سرور اعوان کی جانب سے دائر درخواست پر سماعت کی۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا ہے کہ ابھی ان کی تنزلی کا معاملہ عدالت عالیہ اور سپریم کورٹ میں زیرسماعت ہے۔ اس حوالے سے آئی جی پنجاب مشتاق احمد سکھیرا نے ان کا موقف بھی نہیں سنا اور دوسرے انسپکٹرز کو ترقیاں دینا شروع کر دی ہیں جو غیرقانونی اور غیرآئینی اقدام ہے۔ درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ 150 انسپکٹرز کو جو ڈی ایس پی کے عہدے پرترقی دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے عدالت اس معاملہ پر حکم امتناعی جاری کرے۔ قانون کے تحت جب معاملہ عدالت میں ہو تو اس کو دوبارہ نہیں سنا جا سکتا۔ اس معاملہ پر جسٹس قاسم خان نے درخواست سماعت کے لئے منظور کرتے ہوئے آئی جی پنجاب اور ہوم سیکرٹری کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے 27 اکتوبر تک وضاحت طلب کر لی۔