گروپ انشورنس کی کٹوتی کہاں استعمال ہوتی ہے، لاہور ہائیکورٹ، پنجاب حکومت پر برہمی

19 اکتوبر 2016

لاہور (اپنے نامہ نگار سے)لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس فرخ عرفان خان نے ریٹائرڈ سرکاری ملازمین کو کٹوتی شدہ گروپ انشورنس کی رقم ادا نہ کرنے کیخلاف دائر درخواست میں جواب داخل نہ کرانے پر پنجاب حکومت پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے وضاحت طلب کی ہے کہ گروپ انشورنس کی کٹوتی شدہ رقم کہاں استعمال کی جاتی ہے ۔ درخواست گزاروں کی وکیل ثمرہ ملک نے موقف اختیار کیا کہ پنجاب ویلفیئر فنڈ رولز کی دفعہ آٹھ کے تحت سرکاری ملازمین کی تنخواہوں سے انشورنس کی مد میں لازمی کٹوتی کی جاتی ہے مگر ریٹائر ہونے پر ملازمین کو انشورنس کی رقم ادا نہیں کی جاتی تاہم اگر دوران ملازمت کوئی ملازم فوت ہو جائے تو اس کے ورثاء کو یہ رقم ادا کی جاتی ہے جو انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے۔