سیکٹر آئی ٹن ٹو کے مکینوں کا قصور کیا ہے؟

19 اکتوبر 2016

مکرمی!سی ڈی اے کی غفلت اور لاپروائی کی وجہ سے ہم اہل سیکٹر آئی ٹن ٹو،اسلام آباد الرجی،دمہ اور دوسرے مسائل کا شکار ہیں تقریباً چھ ماہ پہلے سی ڈی اے کے ذمہ دار افسران نے سیکٹر آئی ٹن ٹو کے شمال کی طرف کا سروس روڈ بغرض مرمت اکھاڑ دیا تھا اور تمام راستے کچی مٹی ڈال دی تھی جس کی وجہ سے تمام سیکٹر آئی ٹن ٹو دھول اور گرد و غبار سے اٹ گیا ہے منوں مٹی روزانہ گھروں میں داخل ہورہی ہے۔جس سے اہل علاقہ سخت تنگ آچکے ہیں اور زیادہ تر افراد الرجی،دمہ اور گلے کے مختلف بیماریوں میں مبتلا ہوگئے ہیں گھروں میں رکھے برتن،بسترے،الیکٹرک کے سامان سے لے کر گاڑیوں تک تمام سامان سخت متاثر ہوگیا ہے۔آپ سے گزارش ہے کہ حکومت وقت اور سی ڈی اے ذمہ دار افسران کے گوش گزار کریں کہ اہلیان آئی ٹن ٹو کو بھی صاف ستھری ہوا میں سانس لینے کا حق حاصل ہونا چاہیے اور روڈ بنانے پر مامور ٹھیکداروں کو ہدایت کی جائے کہ کم از کم دن میں ایک مرتبہ روڈ پر پانی کا چھڑکاو¿ کردیا کریں اگر نہیں تو سیکٹر آئی نائن کی طرف سے آنے والی تمام ٹریفک کا رخ چنبیلی روڈ اور دوسری طرف سے آنے والی گاڑیوں کو پیرودھائی اور منڈی جانے کا حکم دیا جائے،تاکہ سیکٹر آئی ٹین ٹو کی عوام کو دھول اور گرد و غبار سے کسی حد تک بچایا جاسکے۔(نصیر اﷲ خان سیکٹر آئی ٹن ٹو،اسلام آباد)