مارگلہ ٹا¶ن میں 300کنال اراضی پر سابق آئی جی کا قبضہ‘ سی ڈی اے کا آپریشن

19 جون 2017

اسلام آباد(وقائع نگار) وفاقی دارلحکومت اسلام آباد کے مارگلہ ٹاون مےں300سو کےنال سرکاری اراضی پر سابق آئی جی اسلام آباد کے قبضے کے خلاف گزشتہ روز سی ڈی اے کے شعبہ انوائرمنٹ ۔ پلاننگ و ڈےزائن اور انفورسمنٹ کی ٹےموں نے آپرےشن کےا ہے اور خلاف قانون بنائی جانے والی ہاوسنگ سکےم کےمرکزی راستے کاٹ دئےے گئے ہےں ۔ سی ڈی اے حکام کے مطابق سی ڈی اے کے شعبہ پارک ڈوےثرن ، پلاننگ و ڈےزائن اور دےگر شعبوں نے مارگلہ ٹاون فےز ٹو کی تےن سو کےنال سرکاری اراضی پر خلاف ضابطہ قبضہ کرکے اس پر نجی ہاوسنگ سکےم بنانے اور سی ڈی اے کی لےنڈ پر غےر قانونی طورپر سڑکوں کا جال بچھانے پر گزشتہ روز سابق انسپکٹرجنرل پولےس اسلام آباد کے منصوبے کے خلاف کاروائی کی ہے سابق آئی جی نے مقامی افراد کے ساتھ مل کر مارگلہ ٹاون کی اےکوائر شدہ اراضی پر بنی گالہ کی طرز پر خسرہ نمبرز مےں ہےرپھےر کرکے سرکاری لےنڈپر قبضہ جمالےا ہے اور اب سی ڈی اے حکام کی ملی بھگت سے اس سرکاری اراضی پر بڑے پےمانے پر پلاٹنگ کاسلسلہ شروع کررکھا ہے اور مارگلہ ٹاون سے سرعام غےر قانونی طورپر سڑکوں کو جال بچھاےا گےا ہے جہاں دس لاکھ روپے فی مرلہ اراضی عام شہرےوں کو فروخت کی جارہی ہے سرکاری اراضی پر قبضہ کروانے مےں سی ڈی اے کے فارےسٹ ڈےپارٹمنٹ کے ملازمےن شامل ہےں گزشتہ روز سی ڈی اے کے پارک ڈوےثرن کے حکام نے سابق آئی جی کی مجوزہ ہاوسنگ سکےم کے خلاف بڑا آپرےشن شروع کےا تو انہےں سخت مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا تاہم حکام نے مذکورہ ہاوسنگ سکےم کو جانے والے تمام راستے بھاری مشےنری سے کاٹ دئےے گئے ہےں پارک ڈوےثرن نے حکام کو فارےسٹ ڈوےثرن کے ان افسران و ملازمےن کے خلاف بھی کاروائی کی سفارش کی ہے جو سرکاری اراضی پر قبضے مےں ملوث ہےں ۔