مقبوضہ کشمیر: بھارتی فوج نے ایک اور نوجوان کو گولی مار کر شہیدکردیا، مظالم کیخلاف مظاہرے جاری

19 جون 2017

سری نگر(کے پی آئی+ نیٹ نیوز) مقبوضہ کشمےر مےں بھارتی فورسز نے رےاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی مےں پلوامہ قصبے مےں اعجاز احمد نامی شہری کو گولی مار کر شہےد کر دےا ہے ۔ جنوبی کشمےر مےں شہادتوں کے بعدشہر سرینگر اور دیگر کئی علاقوں میں کرفےو لگا دےا گےا ہے جبکہ کئی مقامات پر اتوار کے روز بھی احتجاجی مظاہرے ہوئے مظاہرےن اور فورسز کے درمےان جھڑ پوں مےں متعدد شہری زخمی ہو گئے۔ ادھر عسکرےت پسندوں نے جنوبی کشمےر کے بےج بہاڑہ قصبے مےں فوجی کانوائے پر فائرنگ کی اور فرار ہوگئے ۔ جنوبی کشمےر کے بےج بہاڑہ قصبے اور ڈونی وارہ بڈگام مےں عسکرےت پسندوں کی طرف سے بھارتی فورسز پر فائرنگ کے بعد فوج نے بہاڑہ اور ڈونی وارہ بڈگام اور کئی دوسرے علاقوں کو محاصرے مےں لے لےا ہے۔ اتوار کوکرفیو اور سخت ترین سیکورٹی کی وجہ سے شہر سرینگر اور دیگر کئی علاقوں میں ہزاروں لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے۔کٹھ پتلی وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی نے کہا بندوق یا فوج کے ذریعے کشمیر میں امن قائم نہیں ہوگا ۔انہوں نے جموں وکشمیر کے حوا لے سے مذاکراتی عمل کی وکا لت کرتے ہوئے کہا کہ ہر مسئلہ صرف بات چیت کے ذریعے ہی حل کیا جاسکتا ہے ۔حرےت قےادت سےد علی گےلانی ، مےرواعظ، ےاسےن ملک،شبیر احمد شاہ، نعیم احمد خان نے کہا ہمےں دبانے کے لےے ہمارے بچے مارے جارہے ہےں،نہتے عوام کے خون سے ہولی کھیلی جا رہی ہے۔سید علی گیلانی نے جموںمیں تراویح کے دوران ہلڑ بازی اور گالی گلوچ کرنے اور مسلمانوں کو ڈرانے، دھمکانے اور ہراساں کرنے پر اپنی گہری تشویش اور فکر مندی کا اظہار کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ یہ سلسلہ فوری طور پر بند نہیں ہوا تو اس کے سنگین نتایج برآمد ہوں گے، جن کی تمام تر ذمہ داری حکومت پر عائد ہوگی۔