ترک فوج کے 372 اہلکار کھانے کے بعد اسپتال میں داخل

19 جون 2017

انقرہ (آئی این پی )ترک فوج کے 372 اہلکار وں کو کھانے کے بعد ہسپتال لے جانا پڑ گیا ،حکام کا کہنا ہے کہ فوجی اہلکار وں نے متلی کی شکایت کی تھی تاہم کھانے میں زہر ملانے کے حوالے سے کچھ کہنا ابھی قبل از وقت ہوگا۔غیر ملکی میڈیاکے مطابق ترکی میں کھانے کے بعد متاثر' ہونے والے فوجی اہلکاروں کی تعداد 372 تک پہنچ گئی۔ترک وزیردفاع فکری اسحق کا کہنا ہے کہ 590 فوجی اہلکار متاثر ہوئے تھے جن میں سے 372 کو ہسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔مرکزآفندی اسٹیٹ ہسپتال میں موجود فوجیوں کی عیادت کے بعد ترک لینڈ فورسز کے کمانڈر جنرل ذیکی کولاک کے ساتھ صحافیوں سے بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ 'اب 72 فوجیوں سے ہسپتال سے فارغ کردیا گیا ہے اور دیگر فوجیوں کی حالت بھی خطرے سے باہر ہے'۔اسحق کا کہنا تھا کہ 'کسی فوجی کو انتہائی نگہداشت میں نہیں رکھا گیا'۔قبل ازیں منیسا کے گورنر مصطفی ہاکان نے نیوز ایجنسی اناطولو کو بتایا تھا کہ فوجی اہلکار نے متلی کی شکایت کی تھی تاہم کھانے میں زہر ملانے کے حوالے سے کچھ کہنا ابھی قبل از وقت ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ 'ہم اس واقعے کی اصل وجہ کو حتمی طور پر جاری نہیں کرسکتے اور ہمیں لیبارٹری ٹیسٹ کے نتائج کا انتظار ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ اس نے فوجیوں کو غذا فراہم کرنے والی متعلقہ کمپنی کے مالک سمیت 19 ارکان کو حراست میں لیا ہے۔
ترک فوج داخل