کراچی کوایشیا کا سب بڑا منشیات کااڈہ بنادیا گیا‘ اویس نورانی

19 جون 2017

کراچی(نیوز رپورٹر)جمعیت علماءپاکستان کے مرکزی رہنما اور مرکزی جماعت اہل سنت کے نگران اعلیٰ شاہ محمد اویس نورانی صدیقی نے کہا ہے کہ عید کے بعد پاکستانی سیاست کے حالات صحیح نظر نہیں آرہے ہیں، امجد صابری قتل کو بھلادیا گیا، کراچی شہر منشیات کا اڈہ بنتا جا رہا ہے، حالات سازگار نہیں ہیں، اگر حکومت کسی معاملے میں سنجیدہ نہیں ہے تو عدلیہ اور فوج کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا، اس وقت کراچی شہر کو ایشیاءکا سب سے بڑا منشیات کا اڈہ بنادیا گیا ہے، فوج کو چاہیے کہ اس پر بھی نظر کریں، منشیات روکنے والے اداروں کی کارکردگی قابل قبول نہیں ہے،منشیات کے خلاف جو فورسز تشکیل دی گئی ہیں ان کا اپنا کردار مشکوک ہے، گلشن اقبال میںعیسیٰ نگری کا قبرستان منشیات فروشی کا مرکز بن گیا ہے، گلشن اقبال میں رینجرز ہید کوارٹر کی موجودگی میں اتنے بڑے پیمانے پر منشیات فروشی کیسے ہورہی ہے؟ یوم شہادت حضرت علی المرتضیٰ کرم اللہ وجہہ الکریم کی مناسبت سے منعقدہ کانفرنس اورپنجاب سے آئے علماءکرام و خادمین کے وفد کے اعزا ز میں دعوت افطار سے خطاب کرتے ہوئے شاہ محمد اویس نورانی صدیقی نے کہا کہ حضرت علی کرم اللہ وجہہ الکریم شیرا خدا تھے، اسلام سے ٹکرانے سے پہلے ان کی ذات سے مقابلہ کرنا پڑتا تھا اور ان سے مقابلے کی جسارت کسی میں نہ تھی جن چینل پر بے حیائی پھیلائی جا رہی ہے وہاں شیزان کمپنی کی مصنوعات بھی نظر آرہی ہیں، عدلیہ رمضان ٹرانسمیشن کو بھی لگام دے، کیوں کہ پیمرا مصلحت کے باعث بے بس ہے، ایسے حالات پیدا کیئے جا رہے ہیں کہ مذہبی انتشار کو ہوا دی جا سکے، گزشتہ سال میں بعض سرکاری و پرائیوٹ جامعات میں بھی قادیانی سرگرمیوں کے بارے میں اطلاعات موصول ہوئی تھیں، یہ سلسلہ پھیلتا جا رہا ہے، علاقائی صورتحال بھی بگڑ رہی ہے ، اورنگی ٹاﺅن میں علاقائی تصادم بھی ہوچکا ہے، اس موقع پر پنجاب سے آئے علماءکرام نے بھی قادیانی سرگرمیوں پر حکومت کی خاموشی پر تشویش کا اظہار کیا۔