اسرائیلی حملے نہ رکنے پر پاکستان کو اقوام متحدہ کی رکنیت چھوڑ دینی چاہیے۔ انہوں نے امریکا اور برطانیہ سے بھی اسرائیلی جارحیت رکوانے کا مطالبہ کیا ہے۔ الطاف حسین

18 نومبر 2012 (21:15)


اسرائیلی جارحیت اور اقوام عالم کی ذمہ داری کے عنوان پر کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے الطاف حسین نے مذہبی و سیاسی جماعتوں پر سخت تنقید کی ۔ ان کا کہنا تھا کہ تمام جماعتیں فلسطین کے نہتے مسلمانوں کے قتل عام پر خاموش کیوں ہے۔
الطاف حسین نے غزہ کے مسئلے پر بین الاقوامی برادری، اقوام متحدہ اور سلامتی کونسل کی خاموشی پر بھی سخت تنقید کی ۔ انہوں نے حکومت سے مسلم ممالک کے سربراہان کا اجلاس پاکستان میں بلوانے کا مطالبہ کیا ۔ الطاف حسین نے اسلامی تنظیم برائے تعاون پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ او آئی سی مخلص ہوتی تو اسرائیل غزہ پر حملے کی جرات نہ کرتا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ اقوام متحدہ اسرائیلی جارحیت بند نہیں کراتی تو پاکستان کو اس کی رکنیت کو خیر باد کہہ دینا چاہیے۔ کانفرنس میں مفتی منیب، علامہ طاہر اشرفی، احمد رضاقصوری، اعجاز الحق، سرفراز نواز سمیت دیگر افراد نے شرکت کی ۔ اس سے قبل فاروق ستار نے اسرائیلی جارحیت کے خلاف قرارداد پیش کی جس میں حکومت سے مسلم حکمرانوں کا اجلاس اسلام آباد میں بلانے کا مطالبہ کیا ۔ قرارداد میں اسرائیلی حملے کی مذمت اور غزہ کا محاصرہ ختم کرنے کا مطالبہ بھی کیا گیا۔