خراب سکیورٹی کیمرے‘ بیٹھنے کی جگہ نہ پینے کا پانی‘ لاہور ریلوے سٹیشن مسائل کا گڑھ بن گیا

18 نومبر 2012

لاہور (سٹاف رپورٹر) ریلوے افسران کی غفلت و لاپروائی کی وجہ سے صوبائی دارالحکومت کے ریلوے سٹیشن پر مسافر شدید مشکلات کا شکار ہیں۔ ٹرینوں کے آئے روز لٹ ہونے سے مسافر سارا دن سٹیشن پر ٹرینوں کے انتظار پر مجبور ہو گئے ہیں جبکہ سہولیات کی عدم فراہمی پر مسافر شدید مشکلات کا شکار ہیں۔ ریلوے سٹیشن پر مسافروں کے بیٹھنے کیلئے بینجز تک موجود نہیں اور مسافر پلیٹ فارم کے فرش پر بیٹھے رہتے ہیں جبکہ ننھے بچوں، خواتین کے بیٹھنے کے لئے الگ سے کوئی جگہ نہیں بنائی گئی۔ مسافروں کو 8 ماہ سے صاف پانی کی فراہمی بند ہے ا ور مسافر ریلوے سٹیشن سے مہنگے داموں پانی کی بوتلیں خریدتے ہیں۔ سٹیشن پر سکیورٹی نہ ہونے کے برابر ہے اور مسافروں کو بغیر چیکنگ سامان لیجانے کی مکمل اجازت دے دی گئی ہے جبکہ چیکنگ کے لئے لگایا گیا واک تھرو گیٹ بھی زیادہ دیر بند ہی رہتا ہے جبکہ ریلوے سٹیشن پر لگائے گئے سکیورٹی کیمروں میں زیادہ تر سال میں 6 ماہ خراب ہی رہتے ہیں اور فنڈز کی عدم دستیابی کا بہانہ بنا کر ان کو ٹھیک نہیں کرایا جاتا۔ ریلوے سٹیشن پر پولیس خود ساختہ پارکنگ سٹینڈوں پر پرچی لینے کا سلسلہ جاری ہے۔ انتظامیہ کی جانب سے افسران کے منظور نظر مسافروں کو بغیر چیکنگ پلیٹ فارم تک لیجایا جانے لگا۔ ٹرینوں کے لیٹ ہونے کے جاری سلسلہ میں اچانک تیزی سے مسافر کئی کئی گھنٹے انتظار کے بعد واپس گھروں میں جانے پر مجبور ہو گئے جبکہ ہزاروں مسافروں کی جانب سے پرائیویٹ ٹرانسپورٹ کا رخ کیا جانے لگا ہے۔ دوسری جانب ریلوے انتظامیہ کی جانب سے مسافروں کے مسائل حل کرنے کی بجائے مسلسل ٹال مٹول سے کام لیا جا رہا ہے۔