بلوچستان میں ڈاکٹروں کی ہڑتال جاری، وزیر اعلیٰ کا 24 گھنٹے کا الٹی میٹم

18 نومبر 2012


کوئٹہ (بیورو رپورٹ) وزیر اعلیٰ بلوچستان نواب اسلم رئیسانی نے ہڑتال ختم کرنے کے لئے ڈاکٹروں کو 24 گھنٹے کا الٹی میٹم دیتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ڈاکٹرز 24 گھنٹوں میں ڈیوٹی پر واپس نہ آئے تو ان کے کلینک سیل کر دئیے جائیں گے اور ان کی جگہ ہسپتالوں میں فوجی ڈاکٹرز تعینات کئے جائیں گے۔ ہفتہ کو بلوچستان حکومت کی طرف سے جاری اعلامیہ کے مطابق ڈاکٹرز 24 گھنٹوں میں ڈیوٹی پر واپس نہ آئے تو ان کے کلینک سیل کر دئیے جائیں گے۔ پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن بلوچستان کے صدر ڈاکٹر سلطان ترین نے وزیر اعلیٰ بلوچستان نواب محمد اسلم رئیسانی کی جانب سے ہڑتالی ڈاکٹروں کے خلاف کارروائی کی دھمکی کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ جب تک ہمارے مطالبات تسلیم نہیں ہوتے اس وقت تک احتجاج کا سلسلہ جاری رہے گا۔ دریں اثناءماہر چشم ڈاکٹر سعید کو اغوا ہوئے 31 دن گزر گئے، صوبائی حکومت ان کی بازیابی میں اب تک کامیاب نہیں ہو سکی۔ پاکستان میڈیکل ایسوسی ایشن بلوچستان کی اپیل پر سرکاری ہسپتالوں سے بائیکاٹ کا سلسلہ ہفتے کو بھی جاری رہا۔