”محمود علی کا نام تاریخ پاکستان میں سنہری لفظوں میں یاد رکھا جائے گا“

18 نومبر 2012


اسلام آباد (نامہ نگار) تحرےک پاکستان کے رہنماءمحمود علی مرحوم کی پاکستان اور نظرےہ پاکستان سے وابستگی مثالی رہی، وہ بنےاد پرست انقلابی اور دروےش سےاست دان تھے جنہوں نے دو قومی نظرےہ مےں اپنے اےمان کو آخری دم تک قول و فعل سے ثابت کےا، پاکستان کو اےک آزاد اور خود مختار اسلامی جمہوری و فلاحی مملکت بنانے کےلئے وہ اپنے قوت بازو پر بھروسہ کرنا اور دوسروں کی امداد پر انحصار ختم کرنا چاہتے تھے، وہ پاکستان کے داعی تھے اور قرارداد لاہور1940ءکی تکمےل کےلئے ساری زندگی سر گرم عمل رہے۔ ان خےالات کا اظہار ہفتہ کو تحرےک پاکستان کے رہنما آسام مسلم لےگ کے سےکرٹری جنرل، تحرےک تکمےل پاکستان کے بانی صدر اور سابق وفاقی وزےر محمود علی کی چھٹی برسی کے موقع پر شرکاءنے اےچ اےٹ قبرستان مےں انکے مزار پر پھولوں کی چادرےں چڑھانے اور فاتحہ خوانی کے بعد اظہار خےال کرتے ہوئے کےا۔ نظرےہ پاکستان ٹرسٹ کے سےکرٹری شاہد رشےد نے ٹرسٹ کے چےئرمےن مجےد نظامی کی جانب سے چادر چڑھائی، اس موقع پر نظرےہ پاکستان ٹرسٹ، نظرےہ پاکستان فورم اسلام آباد راولپنڈی اور چکوال کے عہدےدار اور مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد موجود تھے جبکہ روزنامہ نوائے وقت راولپنڈی اسلام آباد کے رےذےڈنٹ اےڈےٹر جاوےد صدےق، پروفےسر نعےم قاسم صدر نظرےہ پاکستان فورم راولپنڈی، اسلام آباد فورم کے جنرل سےکرٹری ظفر بختاوری، فورم کے چکوال کے صدر راجہ مجاہد افسر، جوائنٹ سےکرٹری رےٹائر محمد سرور، کرنل شبراز عباسی، عقےل ترےن، ڈاکٹر شہبار رانجھا اور راجہ تےمور ظفر نے خصوصی طور پر شرکت کی۔ اس موقع پر شاہد رشےد نے اپنے خطاب مےں کہا پاکستان کی عظمت و ترقی محمود علی کا سرماےہ فکر و عمل تھا، وہ انگرےز کی عےاری، ہندو کی اصول شکنی، دوست نما دشمنوں اور قدےم نظرےاتی دشمنوں کے کردار سے نئی نسل کو آگاہ کرنے کےلئے کوشاں رہے اےسے لوگ مرا نہےں کرتے وہ ہمارے دلوں مےں ہمےشہ زندہ رہےں گے۔ انہوں نے مطالبہ کےا محمود علی کے جسد خاکی کو قائداعظم کے مزار کے احاطے مےں نور الامےن مرحوم کے پہلو مےں سپردخاک کےا جائے ، وہ اسلام آباد مےں امانتاً دفن ہےں، رےذےڈنٹ اےڈےٹر نوائے وقت جاوےد صدےق نے اپنے خطاب مےں کہا محمود علی مرحوم کی پاکستان اور نظرےہ پاکستان سے وابستگی مثالی رہی۔ انہوں نے نہ صرف پاکستان کی تخلےق کےلئے جدوجہد کی بلکہ پاکستان کے دو لخت ہونے کو تسلےم نہےں کےا، وہ قائداعظمؒ کے وےژن پر کار بند رہے اور وہ نوجوان نسل کےلئے مشعل راہ ہےں، راجہ مجاہد افسر نے کہا محمود علی نے تحرےک پاکستان مےں مثالی کردار ادا کےا اور ہمےشہ پاکستان کی بات کی ہے، انکے مشن کو جاری رکھنا ہو گا، مجےد نظامی وہ واحد شخصےت ہےں جن پر کسی کو کوئی اعتراض نہےں اور وہ سب کو متحد کر سکتے ہےں۔ ظفر بختاوری نے کہا ادارہ نوائے وقت اور مجےد نظامی، محمود علی جےسے ہےروز کی ےاد تازہ رکھے ہوئے ہےں اور انکی کاوشےں قابل تحسےن ہےں۔ انہوں نے کہا محمود علی کا نام پاکستان کی تارےخ مےں سنہری لفظوں مےں ےاد رکھا جائے گا۔ پروفےسر نعےم قاسم نے کہا محمود علی نے پاکستان کی خاطر اپنا وطن چھوڑا سہلٹ جانے سے انکار کےا اگر وہ وہاں جاتے تو انہےں سونے مےں تول دےا جاتا لےکن وہ پاکستان مےں رہے انکی پاکستان سے محبت مثالی تھی، ہمےں محمود علی کے نقش قدم پر چلنا ہو گا۔