زرداری سرائیکی صوبہ بنانے کے اپنے وعدے سے مکر گئے: ممتاز بھٹو

18 نومبر 2012

لاہور (خصوصی رپورٹر) سابق وزیر اعلیٰ سندھ اور مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما ممتاز علی بھٹو نے کہا ہے کہ صدر آصف علی زرداری سرائیکی صوبہ بنانے کے اپنے وعدے سے مکر گئے ہیں جبکہ ان کا سندھ کارڈ بھی اب پرانے بوٹ کی شکل اختیار کر گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خوشامدیوں اور درباریوں کا ٹولہ لے کر یوسف رضا گیلانی کے پاس جانے سے عوام کو کیا ملا؟ وہ گذشتہ روز ٹیلیفون پر نوائے وقت سے گفتگو کر رہے تھے۔ ممتاز بھٹو نے کہا کہ سندھ میں امن و امان کی صورتحال ابتر ہے، ہر طرف خون کی ندیاں بہہ رہی ہیں، صوبے کے حالات کو بلوچستان سے بہتر قرار دینے والے حکمرانوں کو سمندر کا رخ کر لینا چاہے، حکمرانوں کو اقتدار کے ایوانوں سے باہر نکالنا ہو گا۔ ممتاز بھٹو نے کہا کہ آصف زرداری کی ملتان یاترا پر قومی خزانے سے پیسہ خرچ کیا گیا۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ سندھ میں لوٹ مار، ڈکیتیاں اور اغوا کی واردادتیں معمول بن چکی ہیں، ایسی صورتحال میں حالات کو بہتر قرار دینے والوں کو سمندر کا رخ اختیار کر لینا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ حکمران امن و امان کی صورتحال بہتر بنانے کے حوالے سے اپنی نااہلی چھپانے کےلئے کبھی موٹر سائیکل چلانے پر پابندی لگاتے ہیں اورکبھی موبائل فون سروس معطل کر دی جاتی ہے۔