قوم میرے والد کی بریت کے لئے خصوصی دعا کرے: صاحبزادی خلیل چشتی

18 نومبر 2012

کراچی (رپورٹ غزالہ فصیح) بھارت میں 21 سال تک مقدمہ بھگتنے والے بزرگ پاکستانی سائنسدان ڈاکٹر خلیل چشتی 20 نومبر کو پھر سے دہلی میں سپریم کورٹ کے سامنے پیش ہونگے جہاں ان کی رہائی یا قید برقرار رکھنے کا حتمی فیصلہ ہو سکتا ہے‘ بھارتی عدالت نے اس سال مئی میں ڈاکٹر خلیل چشتی کو پاکستان آنے کی اجازت دیتے ہوئے ایک نومبر کو بھارت واپس آنے کا پابند کیا تھا۔ 80 سالہ خلیل چشتی قانون پسندی کا ثبوت دیتے ہوئے عدالتی حکمنامے کے مطابق واپس بھارت پہنچ گئے۔ ڈاکٹر خلیل چشتی کی صاحبزادی شعاع نے نوائے وقت سے گفتگو کرتے ہوئے قوم سے اپنے والد کی بھارتی قید سے رہائی کیلئے خصوصی دعاﺅں کی اپیل کی ہے‘ انہوں نے کہا والد صاحب وہیل چیئر کے بغیر حرکت نہیں کر سکتے‘ 15 مئی کو پاکستان آنے کے بعد وہ مسلسل علیل ہیں تاہم عدالت کے حکم کا احترام کرتے ہوئے والد صاحب مقررہ وقت پر بھارت پہنچ گئے‘ میرے بھائی طارق انہیں ساتھ لے کر گئے ہیں۔