امن مذاکرات کی حمایت پر ملا عمر کا شکریہ، آئندہ دور 30 جولائی کو چین میں ہوگا: افغان صدر

18 جولائی 2015
امن مذاکرات کی حمایت پر ملا عمر کا شکریہ، آئندہ دور 30 جولائی کو چین میں ہوگا: افغان صدر

کابل ( آئی این پی ) افغان صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ طالبان کا سیاسی عمل میں شامل ہونا اہمیت کا حامل ہے ، طالبان سے مذاکرات ہی قیام امن کا واحد راستہ ہے ،حمایت پر ملا عمر کے مشکور ہیں ‘ مذاکرات کا آئندہ دور 30جولائی کو چین میں ہوگا‘ امید ہے کہ مذاکرات میں مزید پیش رفت ہوگی۔ انہوں نے یہ بات کابل میں عید الفطر کی نماز کی ادائیگی کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔ افغان صدر نے کہا کہ پوری دنیا میں دہشتگردی کی مذمت کی جارہی ہے اور دہشتگردی کے خلاف جنگ ہتھیاروں سے نہیں بلکہ مذاکرات سے ہی جیتی جا سکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ طالبان کی طرف سے مذاکرات کی میز پر آنا قابل ستائش ہے کیونکہ قیام امن کیلئے مذاکرات ہی واحد راستہ ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ امن مذاکرات کی بحالی کیلئے طالبان رہنما ملا عمر نے بنیادی کردار ادا کیا جس پر ان کے مشکور ہیں ، طالبان سمیت تمام انتہا پسند تنظیموں کو یہ بات جان لینی چاہیے کہ معاملات صرف مذاکرات سے حل ہوسکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں طالبان سے مذاکرات کا ایک دور ہوچکا ہے جس میں امریکہ اور چین کے نمائندے بھی موجود تھے اور مذاکرات کا دوسرا دور 30جولائی کو چین میں متوقع ہے۔ انہوں نے کہا کہ مذاکرات کا مری میں ہونے والا دور اہمیت کا حامل ہے اور یہ بڑی کامیابی ہے اور گزشتہ 14برسوں سے طالبان سے مذاکرات کی کوششیں ہورہی تھیں جو کبھی کامیاب نہیں ہوئیں لیکن اب اچھی پیش رفت ہورہی ہے۔

آئین سے زیادتی

چلو ایک دن آئین سے سنگین زیادتی کے ملزم کو بھی چار بار نہیں تو ایک بار سزائے ...