8 سے 12 گھنٹے لوڈشیڈنگ، لوگ پریشان، کمالیہ میں مظاہرے

18 جولائی 2015

لاہور+ اسلام آباد (نیوز رپورٹر+ نامہ نگاران+ آن لائن) بجلی کی بندش کا سلسلہ گزشتہ روز بھی جاری رہا جس پر شہری پریشان رہے اور کاروبار شدید متاثر ہوئے۔ شہروں میں 8 سے 10 گھنٹے اور دیہات میں 10 سے 12 گھنٹے سے زائد بجلی بند رہی۔ لوڈشیڈنگ کیخلاف کمالیہ میں احتجاجی مظاہرے کئے گئے۔ بجلی کے نظام میں خسارہ 54 سو میگاواٹ موجود ہے جس کو پورا کرنے کیلئے لوڈشیڈنگ کا سہارا لینا پڑ رہا ہے۔ علاوہ ازیں لاہور میں بارش کے باعث لیسکو کے 56 فیڈر ٹرپ کرگئے جس کے باعث جمعرات اور جمعہ کی رات بعض علاقوں میں بجلی کئی کئی گھنٹے بند رہی جس کے باعث شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ کمالیہ سے نامہ نگار کے مطابق کمالیہ اور گردونواح میں شدید لوڈشیڈنگ سے لوگ عاجز آگئے، مساجد میں وضو کیلئے پانی نہ مل سکا۔ گھروں میں معصوم بچے پانی کی بوند بوند کو ترس گئے۔ شہریوں نے مختلف مقامات پر احتجاجی مظاہرے کئے۔ گذشتہ روز سے غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کا سلسلہ شدت اختیار کرگیا۔ ایک گھنٹے کے بعد کئی کئی گھنٹے کیلئے بجلی غائب رہنے لگی جس کے باعث شدید گرمی میں روزہ دار پریشان ہوکر رہ گئے۔ شہریوں نے غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ کیخلاف کمالیہ کے مختلف علاقوں کچی بستی، اسلام پورہ، لاری اڈا، نجابت پورہ سمیت دیگر علاقوں میں شدید احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے مطالبہ کیا ہے کہ غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ کا فوری خاتمہ کیا جائے۔ علاوہ ازیں اسلام آباد میں مرکزی ایدھی کنٹرول روم میں بجلی بند ہونے سے جڑواں شہروں میں ایمبولینس سروس معطل ہوگئی۔ آئیسکو حکام سے رابطے کے باوجود کوئی جواب نہ مل سکا۔ اسلام آباد میں آبپارہ چوک کے قریب مرکزی ایدھی سینٹر کے کنٹرول رم کی بجلی گزشتہ روز سے غائب ہے جس سے اسلام آباد اور راولپنڈی میں ایدھی ایمبولینس سروس معطل ہوگئی۔ ترجمان ایدھی سینٹر کے مطابق بجلی بند ہونے سے ایدھی کنٹرول روم مکمل طور پر غیرفعال ہوگیا ہے اور بجلی کی بندش کی وجہ سے وائرلیس سسٹم بھی متاثر ہوا ہے۔