سندھ میں غیر اعلانیہ مارشل لا لگا دیا گیا‘ چھاپوں کیخلاف اقوام متحدہ‘ عالمی عدالت میں جائیں گے: الطاف

18 جولائی 2015

لندن + کراچی+ لاہور (نوائے وقت رپورٹ+ خصوصی رپورٹر+ نامہ نگاران) الطاف حسین نے کہا ہے کہ سندھ میں غیراعلانیہ مارشل لاء نافذ کر دیا گیا ہے۔ پیپلزپارٹی کی حکومت سے برطرف افسران پہلے ہی ملک سے فرار ہو چکے ہیں، کرپٹ افسر بتانے سے قاصر ہیں کہ کرپشن کی مد میں کھربوں روپے کس کو دئیے۔ سندھ کا اقتدار مافیا ہمیشہ سے مہاجروں کا مکمل خاتمہ چاہتا ہے۔ پیپلزپارٹی بھٹو سے لے کر آج تک مہاجروں، ایم کیو ایم کے ارکان پارلیمنٹ کو بہکاتی رہی ہے۔ نائن زیرو پر رینجرز کے چھاپے اور گرفتاریوں کی مذمت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چھاپہ عالمی قوانین کے خلاف ہے۔ اس کے خلاف دنیا بھر میں آواز بلند کریں گے۔ اقوام متحدہ اور عالمی عدالت جائیں گے۔ اپنے بیان اور نائن زیرو پر کارکنوں سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ ہمارے مرکز پر چھاپے بین الاقوامی قوانین کے خلاف ہیں۔ بیرون ملک مقیم تمام ساتھی ان چھاپوں کے خلاف آواز بلند کریں۔ چھاپے، گرفتاریاں اور مظالم ہمارے عزائم کو کمزور نہیں کر سکتے۔ عوام اور کارکنان متحد، منظم اور پُرامن رہیں۔ انہوں نے کہا کہ ساتھی چھاپوں اور گرفتاریوں کے لئے ذہنی طور پر تیار رہیں۔ ہماری گرفتاریوں سے پاکستان کی جیلیں بھر جائیں گی۔ تحریک اور جدوجہد آخری سانس تک جاری رہے گی۔ ایم کیو ایم کی قیادت کو غیر قانونی ہتھکنڈوں سے کچلا جا رہا ہے۔ الطاف حسین نے کہا کہ ظلم کی سیاہ رات جلد ختم ہو گی اور شکست باطل کا مقدر ہے۔ دوسری جانب متحدہ کے قائد الطاف حسین کی طرف سے نفرت انگیز تقریر پر ان کے خلاف مقدمات درج کرانے کا سلسلہ جاری ہے۔ جمعہ کو ساہیوال میں 86/6-Rکے رہائشی اعجاز قیصر، ٹوبہ ٹیک سنگھ میں پی ٹی آئی کے کارکن محلہ کمال کے رہائشی چودھری محمد اکرم، سیالکوٹ میں تھانہ مراد پور میں سب انسپکٹر ظصفر اقبال کی رپورٹ پر کوٹلی سید امیر پولیس نے پلواڑہ کے محمد شکیل تھانہ قلعہ کالر والا میں مرتضیٰ کی درخواست پر مقدمات درج کر لئے گئے ہیں۔ گجرات کے چھ تھانوں میں الطاف حسین کے خلاف مقدمات درج کر لئے گئے، مقدمات درج کرانے والے زیادہ تر وکلا اور حکمران جماعت سے تعلق رکھنے والے سیاسی افراد ہیں۔ تھانہ سول لائن نے شہری وقاص کی مدعیت لاری اڈا پولیس نے سلیمان شوکت ایڈووکیٹ، تھانہ رحمانیہ نے چوھدری جاوید مہندی کڑیانوالہ پولیس نے فیض رسول ٹانڈہ پولیس نے بشیر احمد کی رپورٹ پر الطاف حسین کے خلاف مقدمات درج کر لئے۔ چنیوٹ میں جامع مسجد صدیق اکبر سے نماز جمعہ کے بعد نکالی گئی ریلی سے خطاب میں اہلسنت و الجماعت کے ضلعی صدر چودھری محمد سعید نے کہاکہ وطن پاکستان اور عوام کا تحفظ کرنے والی پاک فوج کے خلاف تنقید کرنے والے الطاف بیرونی اشاروں پر شر پھیلا کر ملک کا امن و امان تباہ کرنا چاہتے ہیں۔ ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن نے بھی الطاف حسین کی فوج پر تنقید پر شدید مذمت کرتے ہوئے ایم کیو ایم کے خلاف بینر لگا دئیے ہیں۔تھانہ گکھڑ میں بابر رفیق کی مدعیت میں مقدمہ درج کرایا گیا۔فیروزوالہ کے تھانہ صدر بی ڈویژن اور تھانہ فیروزوالہ میں الطاف حسین پر بغاوت کے پانچ مقدمات درج کرلئے گئے ہیں۔