سیالکوٹ: بھارتی فورسز کی فائرنگ سے شہید ہونیوالے تین شہری سپرد خاک

18 جولائی 2015

سیالکوٹ+ ہیڈ مرالہ (نامہ نگار) بھارتی فورسز کی فائرنگ سے شہید ہونے والے تینوں شہریوں کو سپردخاک کر دیا گیا ہے۔ بھارتی سکیورٹی فورسز نے لائن آف کنٹرول کی خلاف ورزی کرتے ہوئے چپراڑ، عمرانوالی اور دیگر سیکٹروں پر چھوٹے اور بھاری ہتھیاروں سے گولہ باری اور فائرنگ کی تھی جس کے نتیجہ میں قصبہ ملانے کا 60 سالہ محمد بوٹا، 40 سالہ غلام مصطفی اور راحت شہید ہو گئے تھے۔ سی ایم ایچ میں داخل زخمیوں سلیمہ بی بی، شاہدہ بی بی، محمد بوٹا اور ارشد پانچ افراد کو طبی امداد دی جا رہی ہے، ان کی حالت خطرے سے باہر بیان کی جاتی ہے۔ سرحدی علاقوں میں آباد لوگوں میں بھارتی گولہ باری کی وجہ سے خوف و ہراس پایا جاتا ہے، متعدد دیہات کے لوگ محفوظ مقامات پر منتقل ہو چکے ہیں تاہم ان کے حوصلے بلند ہیں۔ لوگوں کا کہنا ہے ہمارے خوشی کے تہواروں پر معصوم اور نہتے دیہاتیوں پر بھارتی سکیورٹی فورسز کی فائرنگ اور گولہ باری ان کا معمول بن چکا ہے۔ ہیڈمرالہ سے نامہ نگار کے مطابق مسلم لیگ کے ایم این اے چوہدری ارمغان سبحانی نے بھارتی فائرنگ سے شہید ہونے والے افراد کی نماز جنازہ میں شرکت کی اور بعدازں متاثرہ خاندانوں کے گھر جاکر اظہار تعزیت کیا۔ اس موقع پر انہوں نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا بھارت مسلسل ہٹ دھرمی سے باز آجائے ورنہ اسے منہ کی کھانا پڑے گی، ایک عرصہ سے بھارت کی طرف سے کنٹرول لائن کی خلاف ورزی کا عمل جاری ہے جو کہ انتہائی افسوسناک ہے اگر یہ سلسلہ نہ رکا تو پھر ہم بھارت کی اینٹ سے اینٹ بجا دیں گے، دشمن کے تمام ناپاک ارادے خاک میں ملادیں گے اس موقع پر ایم پی اے پی پی 121 رانا عارف اقبال ہرناہ نے کہا کہ ہم اس موقع پر اپنے بہن بھائیوں کے دکھ درد میں برابر کے شریک ہیں، بھارتی جارحیت کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ اس موقع پر حاجی نعیم عباس، صوفی اسحاق، چوہدری لطیف وینس، ملک نصر اللہ، حافظ عبدالشکور جلالی، نعیم اقبال، ایس اے حکیم القادری، طارق طیب، چوہدری فضل محمود، وسیم کھوکھر بھی موجود تھے۔