4 فوجیوں کی ہلاکت، حملہ آور کے دہشت گرد گروہ سے تعلق کے شواہد نہیں ملے: امریکی پولیس

18 جولائی 2015

لندن (نمائندہ خصوصی + بی بی سی) امریکہ میں پولیس ریاست ٹینیسی میں امریکی نیوی کی دو عمارتوں پر فائرنگ کرنے والے 24 سالہ شخص کے گھر کی تلاشی لے رہی ہے۔ جمعرات کو امریکی نیوی کی عمارتوں پر فائرنگ سے چار میرین ہلاک ہوگئے تھے۔ فائرنگ کے واقعے میں حملہ آور کو بھی ہلاک کر دیا گیا تھا۔ سٹی پولیس کا کہنا ہے کہ وہ ’ ڈومیسٹک دہشت گردی کے ایکٹ‘ کے طور پر ان دو واقعات کی تحقیقات کر رہے ہیں اور تاحال یہ واضح نہیں ہو سکا کہ حملہ آور کا مقصد کیا تھا۔ 24 سالہ عبدالعزیز نے چٹانوگا کے ہائی سکول اور کالج میں تعلیم حاصل کی۔ انسداد دہشت گردی کے اہلکاروں نے واقعہ سے قبل عبدالعزیز سے تحقیقات نہیں کیں تاہم اس کے والد سے ایک تنظیم کی مالی مدد کے حوالے سے تحقیقات کی گئی تھیں۔ عبدالعزیز نے ٹینیسی یونیورسٹی سے گریجویٹ کیا تھا۔ پولیس نے مسلح شخص کے گھر کے گرد علاقے کو سیل کر دیا ہے۔ عینی شاہدین کے مطابق ان کے گھر کے قریب سے دو خواتین کو ہتھکڑیوں میں لے جاتے دیکھا گیا ہے۔ ایف بی آئی کا کہنا ہے اس بارے میں شواہد نہیں ملے کہ محمد یوسف عبدالعزیز کا کسی بین الاقوامی دہشت گرد گروہ سے تعلق ہے۔ اس شخص کے بارے میں کہا جا رہا ہے وہ کویت میں پیدا ہوا تاہم ابھی یہ واضح نہیں کہ وہ امریکی یا کویتی شہری ہے۔ عبدالعزیز کے ہمسایوں اور اسے جاننے والے طلبہ نے بتایا کہ وہ دوستانہ رویہ رکھتا تھا۔
حملہ آور