جمعتہ الوداع عقیدت و احترام سے منایا گیا

18 جولائی 2015

لاہور (خصوصی نامہ نگار) ملک بھر میں گزشتہ روز جمعتہ الوداع عقیدت و احترام اور روایتی مذہبی جوش و جذبے سے منایا گیا۔ نماز جمعہ کے اجتماعات میں ملکی استحکام اور سلامتی خصوصاً کراچی کے حالات کے حوالے خصوصی دعائیں مانگی گئیں۔ لاہور میں جمعہ کے بڑے اجتماعات بادشاہی مسجد، داتا دربار، مرکز القادسیہ، جامعہ اشرفیہ، جامعہ نعیمہ، جامعتہ المنتظر، مسجد شہدا، جامعہ رحمانیہ، مرکز القدس ودیگر میں ہوئے۔ جمعتہ الوداع کے موقع پر علماء و خطیب حضرات نے جمعہ کے اجتماعات میں دینی موضوعات کے علاوہ ملکی مجموعی صورتحال دہشت گردی کے خلاف جنگ اورکراچی کے حالات کو بھی موضوع بنایا۔ علاوہ ازیں پاکستان علماء کونسل کی اپیل پر ملک بھر میں ’’یوم تحفظ حرمین و مسجد اقصیٰ‘‘ منایا گیا۔ عالمی جماعت اہلسنّت کے زیر اہتمام قبلہ اول کی آزادی کیلئے یوم بیت المقدس منایا گیا۔ سنی اتحاد کونسل کے زیر اہتمام جمعتہ الوداع کو کشمیر، میانمار اور فلسطین کے مظلوم مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے ’’یوم مظلومین‘‘ کے نام سے منایا گیا۔ جامعہ نعیمیہ کی اپیل پر ملک بھر میں جمعتہ الوداع کو ’’یوم یکجہتی پاک فوج‘‘ منایا گیا۔ مختلف اجتماعات میں فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم کیخلاف مذمتی قراردادیں بھی منظور کی گئیں۔ عالمی جماعت اہلسنّت کے زیر اہتمام قبلہ اول کی آزادی کے لئے یوم بیت المقدس منایا گیا۔ ملک بھر کی اڑھائی لاکھ سے زائد مساجد میں جمعہ کے اجتماعات میں علماء نے قبلہ اول کی آزادی اور عالم اسلام کے حکمرانوں کی ذمہ داریوں کے موضوع پر خطابات کئے جبکہ اسرائیل کے خلاف مذمتی قرارداتیں منظور کی گئیں۔ پیر مصطفی رضوی، پیر شاہد حسین گردیزی، مفتی محمد نعیم اختر، مفتی غلام حسن، مفتی محبت علی، علامہ شکیل صدیقی اور دیگر نے مختلف مقامات پر جمعہ کے اجتماعات سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قبلہ اول کی آزادی عالم اسلام کے مسلمانوں پر فرض ہے اگر بیت المقدس آزاد نہ ہوا تو پھر عالم اسلام کے ممالک کا وہی حشر ہوگا جو لیبیا، یمن، عراق، کویت، شام اور دیگر کا ہوا۔ پاکستان علماء کونسل کی اپیل پر ملک بھر میں ’’یوم تحفظ حرمین و مسجد اقصیٰ‘‘ منایاگیا۔ اسلام آباد، لاہور،آزاد کشمیر، گلگت بلتستان، کراچی سمیت ملک بھر میں اجتماعات منعقد کئے گئے اور بیت المقدس کی آزادی، فلسطینیوں پر اسرائیلی مظالم کیخلاف متفقہ قرار دادیں منظور کی گئیں۔ مقررین کا کہنا تھا کہ عالم اسلام کے مسائل کا حل امت مسلمہ کے اتحاد میں ہے۔ محمد طاہر محمود اشرفی نے لاہور میں اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا بھر میں مسلمان کا خون بہہ رہا ہے۔ مذہبی قیادت کی عدم توجہ کی وجہ سے عالم اسلام کے مسائل میں دن بدن اضافہ ہورہا ہے۔ سنی اتحاد کونسل کے زیر اہتمام جمعتہ الوداع کو کشمیر، برما اور فلسطین کے مظلوم مسلمانوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کیلئے ’’یوم مظلومین‘‘ کے نام سے منایا گیا اور علماء اہلسنّت نے برما، کشمیر اور فلسطین کے مسائل کو خطبات جمعہ کا موضوع بنایا اور جمعتہ الوداع کے اجتماعات میں دنیا بھر کے مسلمانوں کے ساتھ ہونے والی نا انصافیوں کے خلاف مذمتی قرار دادیں منظور کی گئیں۔ صاحبزادہ حامد رضا نے اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عالمی امن کیلئے کشمیر، برما اور فلسطین کے مسائل کا حل ضروری ہے۔ حسیب قادری نے المرکز الاسلامی شاد باغ میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیر، برما اور فلسطین کے مظلوم مسلمان امید بھری نظروں سے مسلم حکمرانوں کی طرف دیکھ رہے ہیں۔ علاوہ ازیں جامعہ نعیمیہ کی اپیل پر صوبائی دارلحکومت سمیت ملک بھر میں جمعتہ الوداع کو ’’یوم یکجتہی پاک فوج‘‘ منایا گیا۔ خطبات جمعہ میں اسلام کے سربلندی اور وطن عزیز میں امن وامان، دہشت گردی کے خاتمے کیلئے خصوصی دعائیں مانگیں گی اور شہداء آپریشن ضرب عضب کو خراج عقیدت پیش کیا گیا۔ ناظم اعلیٰ جامعہ نعیمیہ علامہ محمد راغب حسین نعیمی نے خطبہ جمعہ دیتے ہوئے کہا کہ ہم عید کے مبارک موقع پر شہداء آپریشن ضرب عضب کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں جنہوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کر کے وطن عزیز میں امن کی راہ ہموار کی۔ اسلام کے پیغام خودی سے رہنمائی حاصل کرتے ہوئے امت مسلمہ کو اپنی دنیا خود پیدا کرنا ہو گی۔