جھنگ: دریائے چناب میں طغیانی، متعدد دیہات زیرآب

Aug 18, 2018

جھنگ(نامہ نگار) دریائے چنا ب میں طغیانی اور کٹائو کے باعث مزید علاقے زیر آب آگئے۔ علاقہ مکین گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے متعدد افراد اپنے سامان اور مال مویشی لے کر نقل مکانی کرنے پر مجبور ہوگئے۔ موضع بلی حبیب،موضع اناراں والا،چک کچہ،موضع جھبانہ سمیت متعدد دیہات میں پانی گھروں میں داخل ہو گیا۔ ان علاقوں کا زمینی راستہ بھی منقطع ہوگیا ہے جس کے باعث علاقہ مکین گھروں میں محصور ہوکر رہ گئے ہیں سینکڑوں ایکڑ پر کھڑی فصلیں جن میں دالیں،سبزیاں اور چارہ شامل ہے متاثر ہونے کا خدشہ ہے علاقہ مکین اپنی سامان اور مال مویشیوں کے ہمراہ نقل مکانی کرنے پر مجبور ہوگئے ہیں چنیوٹ برج پرایک روزقبل پانی کا گزر ایک لاکھ چونتیس ہزار پانچ سو ساٹھ تھا کہ ہیڈ تریموں پر پانی کی آمد اٹھہتر ہزار نوسو چھتیس کیوسک تھی چنیوٹ سے آنے والا پانی متاثرہ علاقوں سے گزر کر تریموں بیراج پر جاتا ہے جس کے باعث پانی کی سطح میں اضافہ ہوا جبکہ گذشتہ روزچنیوٹ برج سے پانی کا گزر تینتیس ہزارآٹھ سو کیوسک تھاجبکہ تریموں پر پانی کی آمد تیرانوے ہزار چھ سو اسی کیوسک تھی ضلعی انتظامیہ کا کہنا ہے کہ فی الحال کسی بھی بڑے سیلاب کی کوئی اطلاع نہیں طغیانی اور زمینی کٹائو کے باعث نشیبی علاقے زیر آب آئے ہیں اور ان علاقوںمیں متاثرین کی مدد کے لیے محکمہ صحت، لائیو سٹاک سمیت دیگر متعلقہ محکموں کی جانب سے امدادی کیمپ بھی لگا دئیے گئے ہیں۔ دوسری طرف ڈپٹی کمشنر حافظ شوکت علی نے دریائے چناب سے ملحقہ زیر آب علاقوں موضع مگھیانہ، بیلہ رجبانہ اور دیگر کا دورہ کیا۔ اسٹنٹ کمشنر محبوب شہزاد اور ایمرجنسی آفیسر ریسکیو 1122 علی حسنین بھی ہمراہ تھے۔ ڈپٹی کمشنر حافظ شوکت علی نے کہا کہ دریائے چناب میں سیلاب کا کوئی خطرہ نہیں آئندہ چوبیس گھنٹوں میں پانی کا بہائو کم ہونا شروع ہو جائیگا۔ دریا سے ملحقہ نشیبی علاقے زیر آب آئے ہیں۔ متاثرہ علاقوں میں ضلعی انتظامیہ کی طرف سے امدادی کاروائیاں جاری ہیں۔

دریائے چناب/ طغیانی

مزیدخبریں