جے یو پی میں اختلافات، اتوار کو مرکزی شوریٰ کا اجلاس طلب، قاری زوار کو صدر بنایا جائیگا

18 اگست 2017

لاہور (عدنان فاروق) جمعیت علماء پاکستان کے سینئر رہنمائوں نے جے یو پی کی مرکزی قیادت کی جانب سے پارٹی دستور کے مطابق انتخابات نہ کرانے اور پالیسیوں سے اختلاف کرتے ہوئے 20اگست کو لاہور میں مرکزی شوریٰ و سینئر رہنمائوں کا اجلاس طلب کر لیا، جس میں سینئر رہنما قاری زوار بہادر کو اگلی مدت کے لئے جے یو پی کا صدر منتخب کیا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق ناراض رہنمائوں کا کہنا ہے جے یو پی کے دستور اور مرکزی مجلس عاملہ کے فیصلے کے مطابق 12مارچ 2017 کو مرکزی انتخابات ہونا قرار پائے تھے تاہم جمعیت کے مرکزی سیکرٹری جنرل صاحبزادہ اویس نورانی پارٹی انتخابات کی راہ میں رکاوٹ بنے رہے ہیں، جے یو پی کے مرکزی صدر پیر اعجاز ہاشمی کی بارہا توجہ مسلسل دستور شکنی کی جانب دلائی گئی لیکن شکایات کا ازالہ نہ ہونے پر مشاورت کے بعد مرکزی شوریٰ اور سینئر رہنمائوں کا اجلاس طلب کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، جے یو پی کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری اطلاعات رشید احمد رضوی نے نوائے وقت کو بتایا مولانا شاہ احمد نورانی کی قیادت میں ہم نے ہمیشہ پارٹی کو جمہوری انداز میں چلایا لیکن ان کے جانشین جماعت میں گزشتہ تین سال کے زیادہ عرصہ سے آمریت کو پروان چڑھانے میں مصروف ہیں۔ سینئر رہنمائوں نے مرکزی شوری جماعت سے مخلص رہنمائوں کا اجلاس جامعہ محمدیہ رضویہ گلبرگ میں طلب کرلیا اور اس روز ہم اپنی نئی قیادت کا فیصلہ کریں گے۔