حزب المجاہدین کو دہشتگرد قرار دینا تحریک آزادی کو سبوتاژ کرنیکی سازش ہے: عبدالرحمٰن مکی

18 اگست 2017

لاہور (خصوصی نامہ نگار) جماعۃالدعوۃ سیاسی امور کے سربراہ پروفیسر حافظ عبدالرحمن مکی نے امریکہ کی طرف سے کشمیری جہادی تنظیم حزب المجاہدین کو دہشت گرد قرار دئیے جانے پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہا سید صلاح الدین کے بعد حزب المجاہدین کو بھی دہشت گرد قرار دینا تحریک آزادی کشمیر کو سبوتاژ کرنے کی سازشوں کا حصہ ہے۔ امریکہ محض انڈیا کی خوشنودی کیلئے کشمیری تنظیموں کیخلاف دہشت گردی کا پروپیگنڈا کر رہا ہے۔ یہ حافظ محمد سعید پر پابندی کا تسلسل ہے۔ حکومت پاکستان نے حافظ محمد سعید کو نظربند کیا جس پر امریکہ کو سید صلاح الدین اور اب حزب المجاہدین پر پابندیوں کا موقع ملا۔ حزب المجاہدین دہشت گردنہیں کشمیری قوم کی عزتوں و حقوق کاتحفظ کرنے والی جماعت ہے۔ امریکہ کی جانب سے انہیں دہشت گرد قرار دینے سے تحریک آزادی کمزور نہیں بلکہ اور زیادہ مضبوط ہو گی۔اپنے بیان میں انہوںنے کہاکہ حزب المجاہدین پر پابندی کے حالیہ اعلان سے بھارت ، امریکہ گٹھ جوڑ صاف واضح ہو گیا اور یہ بات واضح ہو گئی ہے کہ نہتے کشمیر یوں کی قتل و غارت گری کیلئے مودی سرکار کو ٹرمپ انتظامیہ کی مکمل سرپرستی حاصل ہے۔ بھارتی وزیر اعظم ایک روز قبل گالی اور گولی کی بجائے کشمیریوں کو گلے لگانے کی بات کرتا ہے اور اس سے اگلے دن امریکہ بھارت کو خوش کرنے کیلئے پابندی لگا رہا ہے۔ یہ دوہری پالیسی ہے جو کشمیریوں کیخلاف اختیار کی گئی ہے۔ حالیہ اعلان سے مودی سرکار کی طرح امریکہ کا دوہرا کردار بھی بے نقاب ہو گیا ہے۔