کراچی میں آپریشن تیز ، برطرف پولیس اہلکا ر ، اسکی بیوی اور 4 دہشتگردوں سمیت 13 ملزم گرفتار ، اسلحہ برآمد

18 اگست 2017

کراچی (کرائم رپورٹر) کراچی کے مختلف علاقوں سے برطرف پولیس اہلکار‘ اس کی بیوی‘ چار دہشت گردوں سمیت13 ملزم گرفتار کر لئے گئے جن کے قبضے سے اسلحہ اور دستی بم برآمد کرکے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔ تفصیلات کے مطابق نارتھ میں پولیس کی کارروائی ڈکیتی اور لوٹ مار کی وارداتوں میں ملوث برطرف پولیس کانسٹیبل اور اس کی بیوی سمیت پانچ ملزمان کو گرفتار کرلیا۔ پولیس کے مطابق پولیس کے برطرف کانسٹیبل ظفر حسین نے اپنی بیوی‘ بیٹے اور سالے پر مشتمل گروہ بنا رکھا تھا جو گھروں میں ڈکیتی کے علاوہ بنکوں اور اے ٹی ایم سے رقم نکلوانے والے شہریوں سے لوٹ مار کرتا تھا۔ گرفتار شدگان میں ظفر حسین کے علاوہ اس کی بیوی غزالہ بھی شامل ہے۔ رینجرز نے ایم کیو ایم لندن کے دو کارکنوں سمیت چھ ملزمان کو گرفتار کرکے اسلحہ‘ مسروقہ سامان اور منشیات برآمد کرلی۔ رینجرز کے ترجمان کے مطابق ایم کیو ایم لندن کے دونوں کارکنوں محمد قادر عرف مرچی اور محمد ارشد شیخ جو ٹارگٹ کلنگ سمیت مختلف جرائم میں ملوث ہیں کو درخشاں کے علاقے سے گرفتار کیا گیا جبکہ اس علاقے سے گاڑیوں کے شیشوں کی چوری اور منشیات فروشی میں ملوث لیاری گینگ وار کے دو کارندوں بہادر علی اور حسنین کی گرفتاری بھی عمل میں لائی گئی جبکہ آرٹلری میدان کے علاقے سے دو منشیات فروش خواتین شازیہ اور ثنا کو گرفتار کیا گیا۔ اینٹی وائیلنٹ کرائم سیل نے منگھوپیر کے علاقے مائی گاڑھی میں مقابلے کے بعد دو دہشت گردوں کو گرفتار کرکے دو پستول اور ایک ہینڈ گرنیڈ برآمد کرلیا۔ پولیس کے مطابق دونوں گرفتار دہشت گردوں خلیل اللہ عرف شبیرا عرف اختر خان اور سرفراز عرف زبیر عرف رادھے کا تعلق کالعدم تنظیم لشکر جھنگوی سے ہے اور وہ ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری کے علاوہ ڈکیتی کی وارداتوں میں بھی ملوث ہیں جس کے بارے میں ان سے تفتیش شروع کردی گئی ہے۔
کراچی گرفتار