یعقوب ناصر مسلم لیگ کے قائم مقام صدر بن گئے ، نثار کے تحفظات

18 اگست 2017

اسلام آباد/ لاہور (محمد نواز رضا۔ وقائع نگار خصوصی+ خصوصی رپورٹر) پاکستان مسلم لیگ (ن) کی مرکزی مجلس عاملہ نے سردار یعقوب ناصر کو مسلم لیگ (ن) کا قائم مقام صدر بنانے کے فیصلے کی توثیق کر دی۔ جمعرات کو پنجاب ہائوس میں چیئرمین راجہ ظفر الحق کی صدارت میں مسلم لیگ (ن) کی مرکزی مجلس عاملہ کا اجلاس منعقد ہوا جس میں سردار یعقوب ناصر کو متفقہ طور پر پارٹی کا قائم مقام صدر بنانے کے فیصلے کی توثیق کی گئی۔ اجلاس میں چیئرمین راجہ محمد ظفر الحق نے سردار یعقوب ناصر کا نام قائم مقام صدر کے لئے تجویز کیا جس کی مرکزی مجلس عاملہ نے توثیق کر دی۔ ذرائع کے مطابق چوہدری نثار علی خان نے مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس سے قبل سردار یعقوب ناصر کو قائم مقام صدر بنانے کے فیصلے کے اعلان پر اپنے تحفظات کا اظہار کیا اور کہا کہ اجلاس سے قبل اس نوعیت کے فیصلے ٹیلی ویژن پر آجاتے ہیں اس بات کی تحقیق ہونی چاہیے کہ بند کمرے میں کئے جانے والے فیصلے پریس تک کس طرح پہنچ جاتے ہیں۔ مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس میں ہونے والے فیصلوں کا قبل ازوقت منظر عام پر آجانا تحقیق طلب ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں پارٹی قیادت کو اپنی سوچ کے مطابق مشورے دیتا رہا لیکن ان پر عمل درآمد نہیں کیا گیا لیکن جن کے مشوروں سے ہمیں یہ دن دیکھنا پڑا ان سے کیوں نہیں پوچھا جاتا، پارٹی کو ان سے پوچھنا چاہئے۔ خواجہ سعد رفیق نے چوہدری نثار علی خان کے خیالات کی تائید کی۔ سینیٹر چوہدری تنویر نے کہا کہ حکومت اور مسلم لیگ (ن) کے درمیان کوارڈینیشن کو بڑھانے کی ضرورت ہے لیگل اور میڈیا ٹیم کی تشکیل کا فیصلہ کیا جائے۔ پارٹی کی اعلیٰ سطح کی مذاکراتی ٹیم تشکیل کی جائے جسے اداروں اور سیاسی جماعتوں سے رابطوں کی ذمہ داری سونپی جائے۔ دو گھنٹے تک جاری رہنے والے اجلاس میں خواجہ سعد رفیق، سرانجام خان، سردار مہتاب احمد خان اور ثناء اللہ زہری نے بھی خطاب کیا۔ وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے قراردادیں پیش کیں۔ مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس میں سابق صدر مسلم لیگ (ن) محمد نواز شریف اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے شرکت نہیں کی۔ اجلاس میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی‘ چوہدری نثار علی خان، اسحق ڈار‘ وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر اور سینیٹر چوہدری جعفر اقبال‘ طارق فضل چوہدری، عبدالقادر بلوچ‘ عشرت اشرف‘ چوہدری تنویر‘ حنیف عباسی‘ امیر مقام‘ صدیق الفاروق‘ مشاہد اﷲ اور خرم دستگیر نے شرکت کی۔ بلوچستان کے علاقے لورالائی سے تعلق رکھنے والے سینیٹر سردار یعقوب خان ناصر مسلم لیگ کے دیرینہ کارکن ہیں۔ مسلم لیگ (ن) بلوچستان کے صوبائی صدر رہے، میاں محمد نواز شریف اور مسلم لیگ (ن) کیساتھ ثابت قدمی سے کھڑے رہے، سینیٹر سردار یعقوب ناصر کا شمار ایک منجھے ہوئے سیاستدان اور نوازشریف کے انتہائی قریبی ساتھیوں میں ہوتا ہے۔ سینیٹر سردار یعقوب خان ناصر کی دیرینہ خدمات اور قربانیوں کو مدنظر رکھتے ہوئے سابق وزیراعظم میاں محمد نواز شریف نے انہیں پاکستان مسلم لیگ (ن) کا قائم مقام صدر مقرر کرنے کا فیصلہ کیا۔ یعقوب خان ناصر نے گریجویشن اور ماسٹرز کی ڈگری پنجاب یونیورسٹی سے حاصل کی۔ اپنے آبائی علاقے لورالائی سے 1985ء میں صوبائی اسمبلی کا الیکشن لڑا، 1985سے 1988تک بلوچستان کے وزیرآبپاشی رہے، 1990سے 1993تک وزیراعظم محمد نواز شریف کی کابینہ میں وفاقی وزیر ماحولیات رہے، 1995سے 1997تک سینٹ کے رکن رہے جبکہ 1997میں این اے 263 سے رکن قومی اسمبلی منتخب ہوئے اور میاں محمد نواز شریف کی کابینہ میں وفاقی وزیر ریلوے رہے جبکہ جنرل (ر) پرویز مشرف کے دور آمریت میں پاکستان مسلم لیگ(ن) بلوچستان کے صوبائی صدر رہے اور تمام تر مراعات اور پیشکشوں کو مسترد کر دیا۔ لاہور سے خصوصی رپورٹر کے مطابق مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر و وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف اجلاس میں شریک نہ ہوئے اور لاہور میں طے شدہ سرکاری مصروفیات میں مصروف رہے۔ انہوں نے 180 ایم ماڈل ٹائون میں ترکی زبان سیکھنے کیلئے ایک سال کے کورس میں شرکت کیلئے جانے والے 36 سکالرز کے اعزاز میں منعقدہ تقریب میں شرکت کی۔ اس کے بعد مقامی ہوٹل میں انہوں نے نیشنل ووکیشنل اینڈ ٹیکنیکل ٹریننگ کمشن (NAVTAC) کی صوبائی مقابلوں میں انعام حاصل کرنے والوں کی تقریب تقسیم انعامات میں شرکت کی۔ بعد میں بیدیاں روڈ پر کڈنی اینڈ لیور ٹرانسپلانٹ سنٹر کا دورہ کیا۔
یعقوب ناصر