ملک بھر میں اعلی تعلیم کے 60نئے ادارے قائم کئے جائیں گے

18 اگست 2017

اسلام آباد(چوہدری شاہد اجمل)ہائر ایجوکیشن کمیشن کے ویژن2025کے تحت ملک میں اعلی تعلیم کے اداروں کی تعداد بڑھانے کی منصوبہ بندی کر لی گئی ہے ۔رواں سال ملک بھر میں اعلی تعلیم کے 60نئے تعلیمی ادارے قائم کیے جائیں گے منصوبے کے تحت سال 2018کے اختتام تک ملک کے ہر ضلع میں یونیورسٹی کیمپس قائم کر لیا جائے گا ذرائع کے مطابق اس مقصد کیلئے رواں مالی سال کے بجٹ میں 35ارب 70کروڑ روپے مختص کئے گئے ہیں۔رواں سال جنوبی اور شمالی وزیرستان میں بھی یونیورسٹیز کے کیمپسز قائم ہوں گے اعلی تعلیمی کمیشن کے ویژن 2025کا مقصد عصر حاضر کے تقاضوں کو پورا کرنے کیلئے ہنرمند افرادی قوت پیدا کرنا ہے۔منصوبے کے تحت ہنرمند افرادی قوت پیدا کرنے کیلئے ملک بھرمیں ڈیڑھ سو کمیونٹی کالج قائم کئے جائیں گے۔زرائع کے مطابق اس منصوبے کے تحت ملک میںپندرہ نئی تحقیقی جامعات قائم کی جائیں گی جہاں ٹیکنالوجی ، ادویات ، زراعت ، مواصلات اور صحت سے متعلق شعبوں میں عالمی معیار کے جدید پروگرام شامل ہوں گے ان یونیورسٹیوں میں ملک کی ضروریات کو مدنظر رکھتے ہوئے تحقیق کی جائے گی اور ملکی مسائل کے حل تجویز کیئے جائیں گے منصوبے میں پسماندہ علاقوں میں مختلف سرکاری جامعات کے 100سے زائد سمارٹ کیمپس کا قیام بھی شامل ہے۔ذرائع کے مطابق ٹیکنالوجی پر مبنی تعلیم کے فروغ کیلئے ورچوئل یونیورسٹی اور علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی کے ذیلی کیمپس کی تعداد بھی بڑھائی جائے گی تاکہ دور دارز علاقوںمیں رہنے والے طلباءفاصلاتی نظام تعلیم کا فائدہ اٹھاتے ہوئے اعلیٰ تعلیم تک رسائی حاصل کر سکیں ۔ویژن2025کے تحت سال 2018کے اختتام تک ملک کے ہر ضلع میں یونیورسٹی کیمپس قائم کر لیا جائے گا تاکہ وہ طلبا جو وسائل کی کمی اور یونیورسٹیوں کے دور ہونے کی وجہ سے اعلیٰ تعلیم حاصل نہیں کرپاتے انہیں سہولت فراہم کی جاسکے اور اسی طرح سے یونیورسٹیوں میں سمارٹ کلاس روم کا آغاز بھی کیا جائے گا جس سے طلبا آن لائن پروفیسرز کے لیکچرز لے سکیں گے اور ایک پروفیسر ملک کے کسی بھی حصے میں موجود طلبا کو لیکچر دے سکے گا طلبا سوالات بھی کر سکیں گے انہیں تعلیم حاصل کرنے کے لیے باقاعدہ کلاس میں آنے کی ضرورت نہیں ہو گی۔