نواز شریف اور فیملی سیاست سے آﺅٹ ہوجائیگی ، کوئی ریلیف نہیں دیں گے: زرداری، بلاول

18 اگست 2017

لاہور (خبر نگار) سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا ہے کہ لوگ غلط فہمی میں ہیں، ہمنے نواز شریف کا کبھی ساتھ نہیں دیا، جمہوریت بچائی تھی۔ نواز شریف کے ساتھ پائے نہیں کھائے اور نہ ہی کھانا چاہتا ہوں۔ نواز شریف اور ان کی فیملی سیاست سے آ¶ٹ ہو جائے گی، عمران خان فل ٹاس کھیل رہے ہیں نو بال پر آئیں گے تو دیکھیں گے۔ شریف خاندان کو پیپلز پارٹی سے کوئی ریلیف کی توقع ہے تو ممکن نہیں۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ نواز شریف معصوم نہیں مجرم ہیں، 2 جماعتی دائیں بازو کی سیاست کر رہی ہیں، ملک میں ہمیشہ دائیں بازو کی سیاست رہی تو نقصان ہو گا، ہمارا مقصد بھٹو ازم کے نظریات کے تحت سیاست کرنا ہے، پیپلزپارٹی اپنے طرز سیاست پر چل رہی ہے، مستقل میں جو ہوگا دیکھیں گے، ہم نے میثاق جمہوریت میں کہہ دیا تھا کہ آرٹیکل62،63کو نکا لیں، اب یہ پارلیمنٹ میں آئیگا تو دیکھیں گے۔یہ باتیں انہوںنے بلاول ہاﺅس لاہور میں مشترکہ پریس کانفرنس کے دوران کہیں۔ سابق صدر آصف علی زرداری نے کہاکہ جب سے لاہور آیا ہوں یہاں پر گہما گہمی بڑھ گئی ہے، ملک کا جمہوریت کے بغیر کوئی مستقبل نہیں ہے، اور نہ ہی کوئی راستہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیاست میں کوئی بات حرف آخر نہیں ہوتی مگر نواز شریف کا گزشتہ چار سالوں میں طرز حکمران سیاسی نہیں تھا، میرے دور میں کوئی سیاسی قیدی نہیں تھا، ان کا دور دیکھیں اگر چار سالوں کے بعد آپ اپنے سگے بھائی کو بھی کال کریں گے تو وہ بھی کال نہیں اٹھائے گا، میری دوستی نواز شریف کے ساتھ نہیں جمہوریت کے ساتھ ہے، جلا وطنی کے وقت نواز شریف کے ساتھ تعلقات تھے، لیکن تعلقات وہ ہوتے ہیں جن میں رابطے برقرار رہیں،آصف علی زرداری نے کہا کہ نواز شریف اور ان کے خاندان کو آئندہ سیاست میں نہیں دیکھ رہا، ہم ججز کے مائنڈ سیٹ کو نہیں جانتے شریف فیملی کےخلاف ابھی تو ریفرنسز دائر ہوئے ہیں وکلاءکے ساتھ مشاورت کرکے ان کا جائزہ لیں گے،کسی سے ایگرمنٹ کا وقت گزر گیا، اب تو الیکشن سر پر کھڑے ہیں سب اپنے اپنے امیدوار کھڑے کرتے ہیں، بلاول کی والدہ کی سیاست 22سال کی عمر سے شروع ہوئی تھی، این اے120میں ابھی تو شروعات ہوئی ہے ہم یہاں آبیٹھے ہیں جس سے فرق پڑے گا۔ سابق صدر نے کہا کہ عمران خان غیر سیاسی آدمی ہیں انہیں کیا سمجھاﺅں، نواز شریف اور عمران خان ایک سکے کے دو رخ ہیں، میرے چیئرمین بلاول نے جو کہہ دیاہے میری بھی وہی بات ہے ہمارا مقصد ہے بھٹو ازم کے نظریات کے تحت سیاست کریں فی الحال پیپلزپارٹی اپنے طرز سیاست پر چل رہی ہے مستقبل جو ہوگا دیکھیں گے، ہم نے میثاق جمہوریت میں کہہ دیا تھا کہ آرٹیکل62،63کو نکا لیں۔ آرٹیکل62،63پارلیمنٹ میں آیا تو دیکھیں گے۔ آصف علی زرداری نے مزید کہا کہ نواز شریف کے اسلام آباد سے لاہور واپسی کے قافلے کی سکیورٹی کیلئے20ہزار سکیورٹی اہلکار تعینات تھے، اور ان کے قافلے کی تمام گاڑیاں بی ایم ڈبلیو تھیں بچہ بھی بی ایم ڈبلیو کے نیچے آکر جاں بحق ہوا۔ اس موقع پر چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ ملک میں ہمیشہ دائیں بازو کی سیاست رہی تو ملک کیلئے اچھا نہیں ہوگا، نیشنل ایکشن پلان میں ذکر ہے کہ کالعدم جماعت نام بدل کر سیاست نہیں کر سکتی۔ انہوں نے کہا کہ ہمیشہ سے موقف رہا ہے کہ احتساب سب کا ہونا چاہئے، قوم جانتی ہے نواز شریف معصوم نہیں عدالت نے مجرم قرار دیا ہے، پنجاب اور کے پی کے سے سیاسی سرگرمیوں کو شروع کرنے جارہا ہوں،19کو مانسہرہ اور 26کو اٹک میں جلسہ کروں گا۔

لاہور (سید شعیب الدین سے) پیپلزپارٹی پارلیمنٹرین کے صدر آصف علیزرداری اور پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے دو ٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ اب نوازشریف اور مسلم لیگ ن کے ساتھ کوئی تعاون نہیں کیا جائیگا۔ نوازشریف کا طرز عمل کبھی جمہوری نہیں رہا۔ اگر وہ اپنے آپ کو حق پر سمجھتے ہیں تو پھر مقابلہ کریں اور ڈٹے رہیں۔ ہم پر تو سب کچھ گزر چکا ہے۔ ہمارے قائد ذوالفقار علی بھٹوکو تختہ دار پر لٹکایا گیا‘ ہمارے وزیراعظم کو نااہل کیا گیا خود برسوں جیل میں رہا لیکن کبھی کوئی ایسی بات نہیں کی جس سے ملک کو نقصان پہنچے اور دشمن فائدہ اٹھائے۔ گزشتہ رات بلاول ہا¶س بحریہ ٹا¶ن میں رمیزہ نظامی سمیت سینئر صحافیوں اور اینکرز پرسن سے ملاقات میں انہوں نے کہا کہ پاکستان قائداعظمؒ کا پاکستان اسی وقت بن سکے گا جب ہم متحد اور ایک ساتھ ہوں اور کسی کو یہ ڈر نہ ہوکہ اسے گھر سے اٹھا لیا جائے گا۔ ہمارا مستقبل اسی میں ہے کہ پاکستان ترقی کرے۔