سہراب گوٹھ سے لکی سیمنٹ تک سپر ہائی وے کو کھود کر چھوڑ دیا گیا

18 اگست 2017

کراچی (رپورٹ: علی عباس) کراچی تا حیدر آباد زیر تعمیر موٹر وے کا ترقیاتی کام سست روی کا شکار ہو گیا سہراب گوٹھ سے لکی سیمنٹ فیکٹری تک سپر ہائی وے کو کھود کر چھوڑ دیا گیا ہے اور ٹریفک کیلئے کوئی متبادل راستہ بھی نہیں بنایا گیا جس کے باعث کراچی اور حیدر آباد کے درمیان سفر کرنے والے مسافروں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ واضح رہے کہ این ایچ اے نے متعدد اجلاسوں میں اس بات کو واضح کیا تھا کہ ایم 9 موٹر وے کا کام اگست 2017ء تک مکمل کر لیا جائے گا۔ اس صورتحال کے باعث ٹریفک حادثات میں بھی اضافہ ہو گیا ہے جبکہ اب تک کئی قیمتی جانیں بھی ضائع ہو چکی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ کراچی تا حیدر آباد موٹر وے کا تعمیراتی کام این ایچ اے کے افسران کی عدم دلچسپی کے باعث سست روی کا شکار ہے۔ واضح رہے کہ اس موٹر وے کو 8 ماہ قبل مکمل کیا جانا تھا جو تاحال مکمل نہیں کیا جا سکا ہے۔