کراچی کو بد امنی کے اندھیروں میں نہیں جانے دیں گے‘حافظ نعیم الرحمن

18 اگست 2017

کراچی (نیوز رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ سیاسی مصالحت اور مفاہمت کی پالیسی کے نتیجے میں جرائم میں اضافے کی ذمہ داری قانونی نافذ کر وانے اداروں اور گورنر سندھ پر عائد ہو گی کیونکہ کراچی میں اسٹریٹ کرائمز ،چوری و ڈکیتی اور لوٹ مار کی وارداتوں میں ایک بار پھر اضافہ ہو گیا ہے ۔گورنر محمد زبیر‘ سابق گورنر عشرت العباد کا کردار ادا کر نے سے گریز کریں ۔جماعت اسلامی کراچی کے مینڈیٹ کے حوالے سے گورنر سندھ کے حالیہ ریمارکس کو مکمل طور پر مسترد کر تی ہے اور توقع رکھتی ہے کہ وہ کراچی کی تعمیر وترقی اور عوامی مسائل کے حل کے لیے کوششیں ضرور کریں گے لیکن کراچی کو ایک بار پھر تباہی و بربادی اور بد امنی کے اندھیروں میں نہیں جانے دیں گے ۔عوام چاہتے ہیں کہ سانحہ 12مئی کے قاتلوں ،سانحہ بلدیہ فیکٹری کے 259 افراد کے قاتلوں ، صحافی ولی بابر کے قاتلوں سمیت دہشت گردی اور قتل و غارت گری میں ملوث تمام عناصر اور ان کے سرپرستوں اور سہولت کاروں کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے ۔