نگلیریا نے مزید ایک نوجوان کی جان لے لی

18 اگست 2017

کراچی(ہیلتھ رپورٹر) ہلاکت خیز مرض نگلیریا کے باعث ایک اور شخص جاں بحق ہوگیا۔ 20 سالہ نوجوان عبداللہ احمد نے منگل کے روز آغا خان اسپتال میں دم توڑ دیا‘ متوفی عبداللہ مجاہد کالونی ڈالمیا کارہائشی اور آزاد کشمیر سے تعلق رکھتا تھا۔ نگلیریا کنٹرول کمیٹی‘ محکمہ صحت کے فوکل پرسن ڈاکٹر ظفرمہدی نے بتایاکہ عبداللہ کی ہلاکت کی اطلاع پرڈالمیا کے علاقے میں پانی کے نمونے چیک کئے گئے‘ پانی میں کلورین موجودنہیں تھی‘ ڈی ایم ڈی واٹر بورڈ کو اس کی اطلاع دے دی گئی ہے۔ واضع رہے کہ رواں برس نگلیریا کے باعث پانچ اموات واقع ہوچکی ہیں‘ جن میں سے چار کا تعلق کراچی اورایک کا ٹنڈو الہیار سے ہے۔ ناقابل علاج مرض نگلیریا کا جرثومہ پانی میں پرورش پاتا ہے اور ناک کے راستے مریض کے دماغ تک پہنچ کر ہلاکت کاباعث بنتا ہے۔ محکمہ واٹر بورڈ کی ذمہ داری ہے کہ وہ نگلیریا جرثومے کی پرورش کے مہینوں میں خاص طورپر پانی میں کلورین شامل کرے‘ عموماً جون تا ستمبر نگلیریا جرثومے کی افزائش کا خطرہ موجود رہتا ہے۔ متعلقہ محکمے کی جانب سے تا حال شہرکے بیشتر علاقوں میں پانی میں کلورین شامل نہیں کی گئی۔ تاہم نگلیریا کنٹرول کمیٹی کی جانب سے ٹائونزکی سطح پرکلورین کی گولیاں مفت فراہم کی جارہی ہیں۔نگلیریا کنٹرول کمیٹی کی جانب سے ٹائونز کی سطح پر کلورین کی گولیاں مفت فراہم کی جارہی ہیں۔ شہری اپنی مدد آپ کے تحت نگلیریا سے بچائو کے لئے گھروں میں پانی کے ٹینک میں کلورین شامل کریں۔

EXIT کی تلاش

خدا کو جان دینی ہے۔ جھوٹ لکھنے سے خوف آتا ہے۔ برملا یہ اعتراف کرنے میں لہٰذا ...