چھوٹے نام کی عرفیت سے پکارے جانے والے بڑے بچے

17 جون 2015

مکرمی! اسلام مکمل ضابطہ حیات ہے، ہمارے معاشرے میں بچے مزدوری کرتے نظر آتے ہیں، اگر ان کے وارث حیات نہ ہوں یا اس قسم کی پوزیشن میں ہوں کہ انکی مالی اعانت کر سکیں تو ایسے بچوں کو خصوصی عزت دینی چاہیے تاکہ انکی عزتِ نفس کو ٹھیس نہ پہنچے پر بدقسمتی سے ہم جس پاکستانی معاشرے میں رہتے ہیں وہاں ان مزدور بچوں کو بیٹا، چاند، شہزادے، راجے کی بجائے چھوٹے کے نام سے پکارتے ہیں، یہ تحقیر کے الفاظ ہیں اور ہم دانستہ اور نادانستہ طور پر ان کی عزت ِ نفس کو مجروح کرتے ہیں، ہمارے دو میٹھے بول نہ صرف ان کو عزت دے سکتے ہیں بلکہ ان کے احساسِ کمتری کو بھی ختم کر سکتے ہیں کیونکہ یہ معصوم بچے اپنے گھر کے سربراہ ہوتے ہیں۔ (ریحانہ سعیدہ برنی روڈ گڑھی شاہو لاہور)