ہمارے اقدامات سے خیبر پی کے میں دہشت گردی کے واقعات 60فیصد کم ہوئے: پرویز خٹک:صوبے کے کسی تھانے میں غریب سے زیادتی برداشت نہیں کی جائے گی، تقریب سے خطاب

17 جون 2015

پشاور (اے پی پی )وزیراعلیٰ خیبرپی کے پرویز خٹک نے دہشت گردی کے خلاف جنگ اور صوبے میں عوام کو جان و مال کا تحفظ فراہم کرنے کیلئے خیبرپی کے کی جدید پولیس کے کردار اور جوش و جذبے پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ پولیس کو جدید فورس بنانے کیلئے صوبائی حکومت کے اقدامات کے نتیجے میں صوبے میں دہشت گردی کی کارروائیوں میں 60 فیصد تک کمی آئی ہے صوبے کے کسی بھی تھانے میں غریب کے ساتھ ظلم زیادتی برداشت نہیں کی جائے گی اس کیلئے ہم نے سیاسی مداخلت بند کی ہے اور جب تک تھانوں میں غریب آدمی کو حق اور انصاف ملتا رہے گا پولیس کے معاملات میں مداخلت ہر گز نہیں کی جائے گی اُنہوں نے پولیس کی ترقی، مراعات اور سہولیات کیلئے تمام ممکنہ اقدامات کا یقین دلاتے ہوئے پولیس شہداء کے بچوں کیلئے اے ایس آئی کی پوسٹیں پہلے سے پیداکرنے اور آئندہ ماہ سے سپیشل کمبیٹ یونٹ کیلئے 15 ہزار اور لیڈی کمانڈوز کیلئے تین ہزار روپے ماہانہ الائونس کا اعلان بھی کیا ہے یہ اعلانات اُنہوں نے منگل کے روز جوائنٹ ایلیٹ پولیس ٹریننگ سنٹر، نوشہرہ میںایلیٹ پولیس کے جوانوں اور لیڈی کمانڈوز کی پاسنگ آئوٹ پریڈ میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب اور اس موقع پر میڈیا سے گفتگو کر تے ہوئے کہا کہ اُن کی حکومت نے اقتدار سنبھالتے ہی پولیس کو خود مختار اورا س کے نظام کو شفاف بنانے کیلئے ٹھوس اقدامات اُٹھانے شروع کر دیئے تھے جس سے صوبے میں دہشت گردی کے واقعات گزشتہ پانچ سالوں کے مقابلے میں نصف سے بھی کم رہ گئے ہیں ۔