پیر امجد حسین شاہ کی گرفتاری بلاجواز ہے، عنایت الحق شاہ

17 جولائی 2017

راولپنڈی (نوائے وقت رپورٹ) تحریک لبیک پاکستان راولپنڈی ڈویژن کا ہنگامی اجلاس سید عنایت الحق شاہ سلطانپوری کی زیر صدارت منعقد ہوا۔ اجلاس میں آستانہ عالیہ قطبال شریف کے سجادہ نشین پیر سید امجد حسین شاہ کی بلاجواز گرفتاری کی شدید مذمت کی گئی۔ اس موقع پر عنایت الحق شاہ نے کہا علامہ خادم حسین رضوی تحریک لبیک پاکستان کے مرکزی امیر ہیں اور ہماری جماعت الیکشن کمیشن آف پاکستان سے رجسٹرڈ ہے۔ قانون اور آئین پاکستان اس بات کی اجازت دیتا ہے کہ بحیثیت امیر تحریک لبیک پاکستان علامہ خادم حسین رضوی پورے ملک میں جلسے کرسکتے ہیں۔ تحریک لبیک پاکستان کی روز بروز بڑھتی ہوئی مقبولیت سے مسلم لیگ ن کی صفوں میں کھلبلی مچ چکی ہے کیونکہ یارسول اﷲﷺ کہنے والوں کا ووٹ فقط تحریک لبیک پاکستان کیلئے ہے۔ تحریک لبیک پاکستان ملک پاکستان میں نظام مصطفیٰﷺ کے نفاذ، عریانی اور فحاشی، دہشتگردی، قتل و غارت، چوری، ڈاکا زنی اور کرپشن کے خاتمے کیلئے اپنی جدوجہد جاری رکھے گی۔ اس موقع پر حفیظ اﷲ علوی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت ہوش کے ناخن لے اور پرامن جدوجہد میں روڑے نہ اٹکائے۔ اس موقع پر انہوں نے مقتدر حلقوں، ارباب اختیار کو متنبہ کیا کہ آپ لوگ مسلم لیگ ن کے ملازم نہں بلکہ ریاست کے ملازم ہیں۔ ریاست ماں کی طرح ہوتی ہے اسے تمام کیساتھ یکساں سلوک اختیار کرنا چاہیے۔ اس موقع پر راولپنڈی سٹی کے صدر مفتی صدیق سعدی نے کہا کہ 2018ءکے الیکشن میں اہلسنت مسلم لیگ ن کی طرف سے کئے گئے ہر ایک ظلم کا حساب لیں گے۔ تحریک لبیک پاکستان کے تمام کارکنان کو مرکز کی کال پر تیار رہنے کا حکم دیا گیا ہے۔ اس موقع پر تحریک کے ضلعی رہنماو¿ں چوہدری قدیر احمد، علامہ وثیق احمد چشتی، محمد عثمان مرزا، قاری محمد جاوید، محمد شفیق قادری، علامہ محمد فیاض قریشی ضیائی، ملک محمد رمضان، چوہدری ارشد اقبال، علامہ سعود ضیائی، علامہ قدیر احمد ستی، قاری محمد طفیل چشتی، علامہ سید قمر علی شاہ، صاحبزادہ طاہر محمود چشتی، چوہدری محمد طاہر، چوہدری محمد ارباب، ملک محمد نعیم، راجہ علی اکبر، چوہدری عمران خان،ملک کاشف حیات اعوان، ملک محمد عدنان، علامہ اﷲ داد شاہد، حاجی محمد رمضان، ملک عبدالواحد اور دیگر کثیر تعداد میں کارکنان نے شرکت کی۔