سپریم کورٹ کا عملدرآمد بنچ آج پانامہ کیس کی سماعت کریگا،حکومت جے آئی ٹی رپورٹ چیلنج کریگی

17 جولائی 2017

اسلام آباد (نوائے وقت رپورٹ) جے آئی ٹی کی رپورٹ پر سپریم کورٹ کا 3رکنی پانامہ عملدرآمد بنچ آج سماعت کرے گا۔ سیاسی گرما گرمی عروج پر پہنچ گئی، وزیراعظم نوازشریف اور ان کےخاندان سمیت34 افراد سے تحقیقات کے بعد جے آئی ٹی نے اپنی رپورٹ عدالت عظمیٰ میں جمع کرائی تھی۔ ذرائع کے مطابق حکومت جے آئی ٹی رپورٹ کو عدالت میں چیلنج کرے گی۔ اپوزیشن کے بڑے وفد نے سپریم کورٹ جانے کا فیصلہ کیا ہے، اس حوالے سے پیپلز پارٹی نے بھی وفد بھیجنے پر رضا مندی ظاہر کر دی ہے۔ پیپلزپارٹی، پی ٹی آئی، ایم کیو ایم، جماعت اسلامی سمیت چھوٹی بڑی سب جماعتیں اکٹھی ہیں اور وزیراعظم سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کر رہی ہیں جبکہ اے این پی اور عوامی وطن پارٹی نے سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ دن میں کئی مشاورتی اجلاسوں میں سیاسی وقانونی جوابی حکمت عملی کی تیاری جاری ہے۔ وزیراعظم نے پہلے اپنی کابینہ سے بھرپور اعتماد حاصل کرکے اپوزیشن کے استعفیٰ کے مطالبے کو یکسر مسترد کردیا۔ جیسے جیسے وقت گزر رہا ہے سیاسی درجہ حرارت بڑھتا جا رہا ہے۔ تجزیہ کار کہتے ہیں سیاسی چالیں اپنی جگہ لیکن فیصلہ سیاسی اکھاڑے کی بجائے اب سپریم کورٹ میں ہی ہو گا۔ سپریم کورٹ میں سماعت کیلئے تیاریاں مکمل کی جا چکی ہیں
پانامہ کیس
اسلام آباد(اپنے سٹاف رپورٹر سے) سپرےم کورٹ مےں پانامہ لےکس پر جے آئی ٹی رپورٹ پےش ہونے کے بعد پہلی سماعت کے موقع پر17 جولائی بروز پےر کو پولےس نے سخت ترےن سےکےورٹی انتظامات کر لئے ہےں رےڈ زون جسنے والے تمام راستوں کی سخت چےکنگ کی جائے گی سپرےم کورٹ اور اس کے اطراف سےکےورٹی کےلئے پولےس کی دو ہزار نفری کے علاوہ پولےس کمانڈوز ، لےڈےز کمانڈوز، اےلےٹ فورس اور محافظ سکواڈ بھی لگائے جائےں گے آئی جی اس لام آباد خالد خٹک ، اےس اےس پی آپرےشنز ساجد کےانی نے اتوار کو سےکےورٹی انتظامات کا جائزہ بھی لےا رےنجرز اور اےف سی کے دستے بھی سپرےم کورٹ کی سےکےورٹی کےلئے تعےنات ہوں گے کوئےک رےسپانس فورس بھی ہائی الرٹ رہے گی سپرےم کورٹ مےں سماعت کی صبح چھ بجے سے تاحکم ثانی سےکےورٹی کو ہائی الرٹ رکھا جائے گا سےکےورٹی انتظامات پر نگاہ رکھنے کےلئے فضائی نگرانی کا آپشن بی مدنظر رکھا گےا ہے ۔