برازیلی خاتون سیاستدان کو مظاہروں کے باعث اپنی شادی کے دن بکتر بند گاڑی میں رخصت ہونا پڑا ،انڈے بھی مارے گئے

17 جولائی 2017

برازیلیا (بی بی سی) برازیل کی ایک سیاستدان نے بائیں بازو کے مظاہرین پر اپنی شادی میں آنے والے مہمانوں کے ساتھ جسمانی اور زبانی بدسلوکی کا الزام لگایا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ ایسا ان لوگوں نے اس لئے کیا کہ ان کا خاندان صدر مائیکل ٹیمر کی حمایت کرتا ہے۔25 سالہ ماریا وکٹوریہ بروس صوبہ پرانا کی رکن اسمبلی ہیں اور ان کے والد صدر مائیکل ٹیمر کی حکومت میں وزیر صحت ہیں۔ سینکڑوں افراد جمعہ کو اس چرچ کے باہر اکٹھا ہو گئے تھے جہاں ماریا وکٹوریہ کی شادی کی تقریب جاری تھی۔ مظاہرین نے ان پر انڈے پھینکے اور ماریا وکٹوریہ کو بکتربند گاڑی میں چرچ چھوڑنا پڑا۔ اس شاہ خرچ شادی میں صوبے کا سیاسی طور پر بااختیار طبقہ شامل تھا جن میں ان کے والد ریکارڈو بروس اور والدہ سیڈا بورغیٹی بھی شامل تھیں۔ خیال رہے کہ ان کی والدہ پرانا کی نائب گورنر ہیں۔
رخصت