لاہور، ملتان: ٹریفک پولیس کے ناجائز چالانوں سے تنگ دو ڈرائیور کھمبوں پر چڑھ گئے

17 جولائی 2017

لاہور + ملتان (سٹاف رپورٹر+ نمائندہ خصوصی + آن لائن) لاہور اور ملتان ٹریفک پولیس کے ناجائز چالانوں سے تنگ 2 ڈرائیور کھمبوں پر خودکشی کے لئے چڑھ گئے، تفصیلات کے مطابق لاہور ٹریفک پولیس کی جانب سے 1750روپے کا چالان کئے جانے پر رکشہ ڈرائیور امین ماڈل ٹائون کچہری کے سامنے ہائی وولٹیج تار والے کھمبے پر چڑھ گیا تھا جسے ریسکیو اور پولیس ٹیموں نے بمشکل سمجھا بجھا کر نیچے اتارا۔ امین نے بتایاکہ وہ ایک رکشہ ڈرائیور ہے گزشتہ روز ٹریفک پولیس نے اس کا 1750 روپے کا چالان کر دیا جس پر ٹریفک پولیس کے رویے کیخلاف احتجاجاً پول پر چڑھ گیا۔ مذکورہ شخص نے بتایا کہ میرا تعلق جھنگ سے ہے میری ایک بیٹی اور بیوی مریضہ ہے۔ ٹریفک پولیس کی جانب سے عائد بھاری جرمانہ ادا نہیں کر سکتا۔ ٹریفک اہلکاروں کو تمام دستاویزات اور لائسنس دکھانے کے باوجود چالان سمجھ سے بالاتر ہے، پولیس کے اعلی حکام کو ٹریفک اہلکاروں کے رویے کا نوٹس لینا چاہئے، پولیس نے امین کو حراست میں لے لیا جب کہ ایس پی ٹریفک صدر سردار آصف نے صحافیوں کو بتایا کہ امین کبھی رکشہ ڈرائیور تھا نہ ہی وہ چالان ہونے کی وجہ سے کھمبے پر چڑھا۔ ڈی ایس پی نذر عباس نے اس موقع پر بتایا کہ ابتدائی تفتیش کے مطابق امین ذہنی طور پر معذور لگتا ہے جس کا میڈیکل کرایا جائے گا اور قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔ ادھر ملتان میں ٹریفک پولیس کی جانب سے آئے روز کئے جانے والے چالانوں سے تنگ آ کر ویگن ڈرائیور عبدالسلام جو خانیوال کا رہائشی ہے، خودکشی کے لئے بجلی کے کھمبے پر چڑھ گیا دیگر ڈرائیوروں نے بروقت کارروائی کرکے ڈرائیور کو کھمبے سے اتارا بعد ازاں ٹیوٹا ہائی ایس ویگن سٹی سروس اور جنرل بس سٹینڈ اونرز ایسوسی ایشن کے زیر اہتمام سٹی ٹریفک پولیس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ڈرائیوروں نے کہا چیف ٹریفک پولیس آفیسر کی ویگن ڈرائیوروں کے خلاف انتقامی کارروائیوں کی وجہ سے ان کے گھروں کا چولہا ٹھنڈا ہو گیا، ٹریفک وارڈنز نے جینا دوبھر کر دیا ہے ان حالات میں اگر کسی ویگن یا رکشہ ڈرائیورز نے خود کشی کرلی تو اس کا پرچہ سی ٹی او کے خلاف درج کرایا جائے گا۔