این اے 260 جے یوآئی کے عثمان بادینی رکن قومی اسمبلی منتخب

17 جولائی 2017

کوئٹہ(بیورو رپورٹ)قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 260پر ضمنی انتخاب مکمل ،تما م 407پو لنگ اسٹیشنوں کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق جمعیت علماء اسلام (ف) کے امیدوار انجینئر میر عثمان بادینی نے 43191ووٹ حاصل کر کے میدان مارلیا بی این پی(مینگل) کے میر بہادر خان مینگل دوسرے ،جبکہ پشتونخواملی عوامی پارٹی کے جمال ترکئی تیسرے اور پیپلزپارٹی کے سردار زادہ عمیر محمد حسنی چوتھے نمبر پر رہے تفصیلات کے مطابق قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 260کوئٹہ کم چاغی کم نو شکی کے ضمنی انتخاب میںکل 407 پولنگ اسٹیشنوں کے غیر حتمی غیر سرکاری نتائج کے مطابق جمعیت علماء اسلام (ف) کے امیدوار انجینئر میر عثمان بادینی43ہزار 1سو 91ووٹ لیکر کامیاب ہوگئے ،بلوچستان نیشنل پارٹی( مینگل) کے امیدوار میر بہادر مینگل37ہزار2سو ووٹ لیکر دوسرے نمبر پر جبکہ حکومتی جماعت پشتونخواملی عوامی پارٹی کے جمال ترکئی 19ہزارووٹ لیکر تیسرے اور پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدوار سردار زادہ عمیر محمد حسنی15ہزار 4سو 13 ووٹ لیکر چوتھے نمبر پر رہے ۔۔پشتونخواملی عوامی پارٹی کے رکن قومی اسمبلی عبدالرحیم مندوخیل کی وفات کے بعد خالی ہونے والی قومی اسمبلی کی نشست حلقہ این اے 260پر ضمنی انتخاب کے دوران پورا دن پولنگ خوش اسلوبی ہوئی اس موقع پر سکیورٹی کے بھی سخت انتظامات کئے گئے تھے۔دریں اثناء ڈپٹی چیئرمین سینیٹ و جمعیت علماء اسلام کے مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا عبدالغفور حیدری نے کہا ہے قوم پرستی کے نا م پر ووٹ لینے والوں کو عوام نے مستر د کردیا ہے ،نفرت کی سیاست نے بلوچستان کو تباہی کے دہا نے پر لا کر کھڑا کردیا ہے ،صوبے میں لوٹ مار کا بازار گرم ہے ،این اے 260کے ضمنی انتخاب میں جمعیت علما ء اسلا م کی فتح نے ثابت کیا کہ جمعیت بلوچستان کی سب سے مقبول جماعت ہے اور آئند ہ الیکشن میں جمعیت علماء اسلام بلوچستان میں حکو مت بنائے گی ،یہ با ت انہوں نے اتوار کو قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 260 کے ضمنی انتخاب میں کامیاب ہونے والے جمعیت علما ء اسلام کے امیدوارانجینئر عثمان بادینی کی گھر آمد کے موقع پر صحا فیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ،انہوں نے کہا کہ پارٹی کے صوبائی قائدین اور کارکنوں نے دن رات محنت کرکے عثمان بادینی کو کامیابی دلائی جس پر پارٹی قیادت اور کارکن مبارک باد کے مستحق ہیں ۔
این اے260