صاف پانی مہیا نہیں کرسکتے تو ممبران اسمبلی کو کرسیوں پر رہنے کا حق نہیں : پاسبان

17 جولائی 2017

کراچی (نیوز رپورٹر)پاسبان پاکستان کے سینئر نائب صدر رفیق احمد خاصخیلی نے کہا ہے کہ صوبائی حکومت ، وزراء اورسندھ سے تعلق رکھنے والے ارکانِ صوبائی اور قومی اسمبلی اگر عوام کو پینے کا صاف پانی مہیا نہیں کرسکتے تو انہیں اپنی کرسیوں سے چمٹے رہنے کا کوئی حق نہیں ۔عوام کو پینے کا صاف پانی دو ورنہ کرسی چھوڑ دو۔وڈیرہ شاہی اور بڑھتی ہوئی کرپشن نے عوام کوصاف پانی کی بنیادی سہولت سے محروم کرکے خطرناک بیماریوں اور موت کے منہ میں دھکیل دیا ہے ۔ سندھ واٹر کمیشن کی رپورٹ کہ کراچی میں 90فیصد اور سندھ میں 83 فیصدپانی کے نمونے انسانوں کے لئے خطرناک ہیں اور کراچی میں پینے کے پانی میں انسانی فضلہ کی بڑی مقدار پائی گئی ہے ، انتہائی تشویشناک اور ہوش رہا ہے ۔اس صورت حال پر تو حکمرانوں کو ہل جانا چاہئیے لیکن اُن کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی ۔ پاسبان، صوبہ سندھ کے تمام ضلعی اور تحصیل ہیڈ کوارٹر زمیں اس سلسلے میں احتجاج مظاہروں کا اعلان کرتی ہے ۔ رفیق احمد خاصخیلی نے مزید کہا کہ سندھ کے دریائوں اور نہروں کو آلودہ کردیا گیا ہے ۔آبی ذخائر کی حفاظت میں لاپرواہی برتی جارہی ہے ۔