وفاقی محتسب نے 2013ء سے 2016 تک تقریباً اڑھائی لاکھ شکایات کا فیصلہ کیا

17 جولائی 2016

شیخوپورہ(نامہ نگارخصوصی)وفاقی محتسب سلمان فاروقی نے کہا ہے کہ جنوری 2013ء تا جون 2016تک 247948شکایات کا فیصلہ کیا گیا اور صرف ایک فیصد شکایات پر صدر پاکستان سے اپیل کی گئی ، 93فیصد فیصلوں پر مکمل عملدر آمد ہوا ، جلد انصاف کیلئے اگرچہ شکایات کا فیصلہ 60دن کے اندر کرنا چاہئے لیکن جنوری 2015کے بعد شکایات کے فیصلہ کی مدت میں مزیدکمی ہوئی جن کا فیصلہ 60ایام کی بجائے 45ایام میں کیا گیا اب شکایات میں کوئی بیک لاک نہیں ، یہ بات انہوں نے یہاں شیخوپورہ چیمبرز آف کامرس اینڈ انڈسٹریز میں ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں چیئرمین منظور الحق ملک ، سابق صدور طارق نذیر ، امجد نذیر بٹ، شیخ عبدالحفیظ ، میاں فاروق احمد، طارق مغل اور سینئر ایڈوائزر و رجسٹرار کمشنر اوور سیز پاکستانیز حافظ احسان احمد کھوکھر سمیت وفاقی محکموں کے افسران نے بھی شرکت کی، وفاقی محتسب نے مزید بتایا کہ ایچ سی آ ر آئی سوفٹ کمپلین ریزولیشن سسٹم کے تحت شکایات کا فیصلہ 15ایام میں ضلعی و سب ڈویژنل لیب پر کیا جارہا ہے جن میں 36اضلاع اور 90سب ڈویژن شامل ہیں تاہم وفاقی حکومت کی اجازت کے بعد اس سسٹم کا دائرہ کار پاکستان کے 450اضلاع اور سب ڈویژنوں تک بڑھا دیا جائے گا۔