اردگان کوسٹ گارڈ کے گھر پیدا ہوئے سڑک پر شکنجبین اور روغنی نان بھی بیچتے رہے

17 جولائی 2016
اردگان کوسٹ گارڈ کے گھر پیدا ہوئے سڑک پر شکنجبین اور روغنی نان بھی بیچتے رہے

اسلام آباد(صباح نیوز)ترکی کے صدر رجب طیب اردگان 1954 میں ترکی میں بحر اسود کے ساحلی علاقے میں کوسٹ گارڈ کے گھر پیدا ہوئے،نوجوان کے طور پر اردگان اضافی پیسہ کمانے کے لیے سڑکوں پر سکنجبین اور روغنی نان فروخت کیا کرتے تھے۔ جب وہ 13سال کے تھے تو ان کے والد نے اپنے پانچوں بچوں کو بہتر سہولیات فراہم کرنے کے خیال سے استنبول منتقل ہونے کا فیصلہ کیا۔ اردغان کو جو سیاسی کامیابیاں حاصل ہوئیں ہیں ان کے پس پشت معاشی استحکام تھا۔ معاشی شرح نمو ساڑھے چار فی صد رہی۔استنبول کی مرمرا یونیورسٹی سے مینجمنٹ میں ڈگری حاصل کرنے سے قبل انھوں نے ایک اسلامی ادارے میں تعلیم حاصل کی۔ وہ پیشہ ورانہ سطح پر فٹبال بھی کھیل چکے ہیں۔ اقتدار میں آنے کا ان کا سفر اس وقت مکمل ہوا جب اے کے پی اقتدار میں آئی اور وہ وزیر اعظم بنائے گئے۔ 1994میں وہ استنبول کے میئر بنے ان کے ناقدین بھی اعتراف کرتے ہیں کہ انھوں نے استنبول کو صاف کرنے اور ہریالی لانے کے لیے بہت اچھے کام کیا۔ 1999میں انھیں چار ماہ جیل میں گزارنے پڑے۔انھوں نے وطن پرستی سے سرشار نظم پڑھی تھی جس میں کہا گیا تھا کہ مسجدیں ہماری چھائونیاں ہیں، گنبدیں ہمارے حود ہیں، مینار ہماری سنگینیں ہیں اور مومن ہمارے سپاہی ہیں۔اردگان اے کے پارٹی کے قیام کے ایک سال بعد 2002میں اقتدار میں آئے۔ وہ 11سال تک ترکی کے وزیر اعظم رہے۔ 2014میں ملک کے پہلے براہ راست صدر منتخب ہوئے۔ نومبر 2014میں ہونے والے انتخابات میں ان کی پارٹی کو واضح برتری ملی ۔اردوگان کے دور اقتدار میں فوج کے خلاف کارروائی کی گئی۔