افغانستان کا پاکستانی ورکرز کو نکالنے کا عاجلانہ اقدام

17 جولائی 2016
افغانستان کا پاکستانی ورکرز کو نکالنے کا عاجلانہ اقدام

افغان سکیورٹی فورسز نے پاکستانی ورکرزکو افغانستان سے نکل جانے کا حکم دیدیا۔ جسکے بعددرجنوں پاکستانی طورخم سرحد پار کر کے پاکستان آگئے۔
پاکستان کیطرف سے افغان باشندوں کے پاکستان میں داخلے پر پابندی نہیں لگائی گئی۔ مطلوبہ دستاویزات پر افغان باشندے پاکستان آ سکتے ہیں۔ یہ اقدامات دہشتگردوں کا پاکستان میں راستہ روکنے کیلئے کئے گئے ہیں۔ اسکی افغانستان حکومت کی طرف سے شدید مخالفت کی جا رہی ہے جس سے افغان حکمرانوں کی بدنیتی ظاہر ہوتی ہے۔ وہ بھارت کے ایما پر پاکستان میں مداخلت جاری رکھنا چاہتے ہیں جس کی پاکستان کی طرف سے کسی طور اجازت نہیں دی جا سکتی۔ پاکستان نے اسی لئے ہر قیمت پر انٹری پوائنٹس پر گیٹ لگانے کا فیصلہ کرکے اس پر عمل بھی شروع کر دیا ہے۔ افغان سکیورٹی حکام کی طرف سے پاکستانی ورکرز کو افغانستان سے بے دخل کرنے سے دونوں ملکوں کے تعلقات میں مزید تلخی اور کشیدگی پیدا ہو سکتی ہے۔ پاکستان میں تیس لاکھ افغان 35 سال سے موجود ہیں۔ پاکستان انکو باعزت طریقے سے واپس بھجوانا چاہتا ہے۔پاکستان کے احسانات کا بدلہ محدود تعداد میں افغانستان میں موجود پاکستانیوں کو بے دخل کرکے نہ دیں۔