دہشت گردی پاکستان اور افغانستان کیلئے مشترکہ خطرہ ہے: وزیراعظم

17 جولائی 2016

لاہور (خصوصی رپورٹر+ این این آئی+ نوائے وقت رپورٹ) وزیراعظم محمد نوازشریف سے افغانستان کے صدر اشرف غنی نے ٹیلیفونک رابطہ کرکے خیریت دریافت کی اور نیک خواہشات کا اظہار کیا۔ افغان صدر نے وزیراعظم محمد نوازشریف سے ٹیلی فون پر دوطرفہ تعلقات کے حوالے سے بھی تبادلہ خیال کیا گیا۔ افغان صدر اشرف غنی نے وزیر اعظم نواز شریف کو آگاہ کیا کہ اے پی ایس حملے کا ماسٹر مائنڈ عمر خراسانی اپنے 4ساتھیوں سمیت مارا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اے پی ایس حملہ پاکستان اور دنیا کیلئے بڑا سانحہ تھا، اے پی ایس حملے کے مجرم اپنے منطقی انجام کو پہنچ چکے ہیں جس پر وزیراعظم نوازشریف نے افغانستان میں کالعدم تحریک طالبان کے دہشت گردوں کے خاتمے پر شکریہ ادا کیا۔ نواز شریف کا کہنا تھا کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف لڑ رہا ہے، اپنی سرزمین سے آخری دہشت گرد کے خاتمے کیلئے پر عزم ہیں، دہشت گردی کے خلاف سکیورٹی فورسز نے بے مثال قربانیاں دیں، اپنی سرزمین سے ہر دہشت گرد کے خاتمے کی مہم کی قیادت کروں گا۔ دہشت گردی پاکستان اور افغانستان کیلئے مشترکہ خطرہ ہے۔ دہشت گردی کے ناسور سے نمٹنے کے لئے دونوں ملکوں کو مربوط تعاون کرنا ہو گا۔