ڈویلپمنٹ کے نام پر ہزاروں توانا درخت کاٹ کر نئے پودے لگانا عقلمندی نہیں، لاہور بچائو تحریک

17 فروری 2015

لاہور(لیڈی رپورٹر)لاہوربچاؤ تحریک اور لاہورکنزرویشن سوسائٹی کے رہنماؤںنے شہرکی سڑکوں کی توسیع کے دوران درختوں کی کٹائی کے عمل کوانتہائی قابل مذمت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ صرف سات فیصد کارسواروںکی سہولت کیلئے سگنل فری کوریڈورزاور ایکپریس وے پر کثیرسرمایہ خرچ کرکے شہرکاحسن بربادکرنا کسی طرح درست نہیں ، ڈویلپمنٹ کے پراجیکٹس عوامی مفاد میں تشکیل دئیے جائیں ہزاروں توانادرخت کاٹ کرنئے پودے لگانا کوئی عقلمندی نہیں، سڑکوںکی بہتات کے باعث لاہور کے درجہ حرارت میں آٹھ درجہ تک اضافہ ہو جائے گا، آلودگی میں اضافہ ہو اور بیماریاںبڑھیںگی ۔ گزشتہ روز لاہور پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب میں آئی اے رحمن، عمرانہ ٹوانہ ، ڈاکٹر اعجازانور،فریال گوہر ودیگر نے مزید کہا کہ ڈویلپمنٹ کامطلب صرف سڑکیں کھلی کرنانہیں یہ ایک مکمل سائنس ہے ، عوامی شمولیت کے بغیرشارٹ ٹرم ، احساسات سے خالی اورکھوکھلی منصوبہ بندی کے باعث شہرکے سبزے کوکنکریٹ میںبدل دیا گیاہے۔ شرکاء نے وزیراعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیاکہ منصوبے بناتے وقت زمینی حقائق کو مدنظررکھاجائے ورنہ شہرکی سڑکوں پر بھرپوراحتجاج کیاجائے گا۔ اس موقع پردانشورحسین نقی،رضاعلی دادا، علی امجد ، تنویراحمدودیگر بھی موجودتھے۔

عقلمندی

ایک ملک میں یہ رواج تھا کہ وہ اپنا ایک بادشاہ چُنتے تھے۔ دس سال تک اس کی بہت ...